fbpx

خواتین زیادتی کا جھوٹا الزام لگائیں گی تو کیا سزا ہو گی؟

سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے انسانی حقوق میں سیالکوٹ میں سری لنکن شہری کی ہلاکت پر قرارداد مذمت متفقہ طور پر منظور
کام کی جگہوں پر خواتین کوہراساں کرنے سے تحفظ کاترمیمی بل کمیٹی نے پاس کرلیا،
بل کے بعد کوئی خواتین کو اپنے ادارے میں کام پر نہیں رکھے گا،چیئرمین کمیٹی
کام کی جگہوں پر خواتین کے تحفظ کے لیے سخت قانون ضروری ہے ،خواتین ارکان کمیٹی
اداروں میں خواتین کی مخصوص تعداد میں بھرتی لازمی بنانے کے لیے قانون سازی بھی کریں گے،سینٹر قرة العین مری
سینیٹر مہرتاج روغانی نے خواتین کے جھوٹا الزام لگانے پر سزاختم کرنے کی مخالفت کردی ،
خواتین جھوٹے الزام بھی لگاتی ہیں جھوٹا الزام ثابت ہونے پر 50 ہزارنہیں 50 لاکھ جرمانہ ہونا چاہیے ،مہرتاج روغانی
جبری گمشدگی کے حوالے سے بل قومی اسمبلی سے پاس ہوگیا ہے اب سینیٹ میں آنا ، شیریں مزاری

اسلام آباد(محمداویس )سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے انسانی حقوق نے سیالکوٹ میں سری لنکن شہری کی ہلاکت پر قراردادمذمت متفقہ طور پر منظورکرلی کمیٹی میں سری لنکن شہری کے لیے ایک منٹ کی خاموشی اختیارکی گئی ۔کام کی جگہوں پر خواتین کوہراساں کرنے سے تحفظ کاترمیمی بل کمیٹی نے پاس کرلیا،چیئرمین کمیٹی نے کہاکہ اس بل کے بعد کوئی خواتین کواپنے ادارے میں کام پر نہیں رکھے گا،خواتین ارکان نے کہاکہ کام کی جگہوں پر خواتین کے تحفظ کے لیے سخت قانون ضروری ہے ،اداروں میں خواتین کی مخصوص تعداد میں بھرتی کے لیے قانون سازی بھی کریں گے تاکہ ادارے خواتین کوبھرتی کرنے کے پابندہوں۔سینیٹر مہرتاج روغانی نے خواتین کے جھوٹا الزام لگانے پر سزاختم کرنے کی مخالفت کردی ،خواتین جھوٹے الزام بھی لگاتی ہیں جھوٹاالزام ثابت ہونے پر 50ہزارنہیں 50لاکھ جرمانہ ہوناچاہیے ۔وزیر انسانی حقوق شیریں مزاری نے کہاہے کہ جبری گمشدگی کے حوالے سے بل قومی اسمبلی سے پاس ہوگیا ہے اب بل سینیٹ میں آنا۔

سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے انسانی حقوق کااجلاس چیئرمین ولیداقبال کی سربراہی میں پارلیمنٹ ہاوس میں ہوا۔اجلاس شروع ہواتوسیالکوٹ میں سری لنکن شہری کی ہلاکت پر ایک منٹ کی خاموشی اختیار کی گئی ۔اجلاس میں طاہر بزنجو،گلدیپ سنگھ،سیمی ایذدی ،عابدہ محمداعظیم،پروفیسرمہرتاج روغانی ،سید فیصل علی سبزواری نے شرکت کی ۔اجلاس میں وزیر انسانی حقوق شیریں مزاری نے بھی شرکت کی۔طاہر بزنجو نے کہاکہ بلوچستان یونیورسٹی سے غائب ہونے والے طلبہ پر آئی جی کی رپورٹ پر ہم نے عدم اعتماد کیا تھا اور سفارش کی تھی کہ اس کو 6دسمبر کہ میٹنگ کے ایجنڈے پر رکھا جائے ۔مگر نہیں رکھ گیا ہے ۔حکومت نے کہاکہ دھرنہ ختم کریں 15دن کے اندر رہاکردیں گے ۔بلوچستان یونیورسٹی میں تاحال دھرنہ جاری ہے ۔11دسمبر کو یہ ڈیڈ لائن ختم ہورہی ہے ۔بلوچستان کے حالات حد سے زیادہ خراب ہوگئے ہیں ۔گوادر میں ایک ماہ سے دھرنہ ہے گوادر بند ہے ساحلی علاقے بند ہیں غیرقانونی ٹرالر پر احتجاج کررہے ہیں مگر پیش رفت کچھ نہیں ہورہی ہے ۔لاپتہ افراد کے حوالے سے کچھ نہیں کرسکتے تو بتادیں ہم اپنا وقت پھر بتاکر ضائع نہیں کریں گے ۔وزیرانسانی حقوق شیریں مزاری نے کہاکہ جبری گمشدگی کے حوالے سے بل قومی اسمبلی سے پاس ہوگیا ہے اب سینیٹ میں آنا ۔ چیئرمین کمیٹی سینیٹرولیداقبال نے کہاکہ اگلے اجلاس میں بلوچستان کے لاپتہ طلبہ کا معاملہ اٹھائیں گے ۔

فیصل سبزواری نے کہاکہ توہین مذہب کے حوالے سے او آئی سی کے ہونے والے اجلاس میں اس مسئلے کو اٹھایا جائے ۔کمیٹی میں چیئرمین کمیٹی نے سیالکوٹ میں سری لنکن شہری کی ہلاکت پر مذمتی قرارداد کمیٹی میں پیش کی جس کو متفقہ طور پر پاس کرلی ۔کمیٹی میں کام کی جگہوں پر خواتین کوہراساں کرنے سے تحفظ کاترمیمی بل شریں مزاری نے پیش کرتے ہوئے کہاکہ بل میں کام کی جگہوں کی تعریف کو وسیع کیا ہے ۔بل میں جھوٹے الزمات پر سزا کی تجویز بھی دی ہے ۔خواتین وکیلوں سے بات کرکے اس بل میں زیادہ ترامیم لائے ہیں۔کمیٹی نے سینیٹر شیری رحمان اور کیشو بھائی کوخصوصی دعوت پر بلایا۔شیری رحمن نے کہاکہ اس قانون میں سقم ہے ۔میشع شفیع کا کیس بہت مشہور ہوا ہے ۔گھر پر اگر خاتون پر تشدد ہوتی ہے تو وہ تشدد ہے کام کی جگہوں کی تعریف کو وسیع کی جائے ۔الزام جھوٹا ثابت ہونے پر سزا کا غلط استعمال ہوگا اس لیے اس کوبل سے نکال دیاجائے ۔وزیر انسانی حقوق نے کہاکہ جھوٹا الزام لگانے پر ہم نے سزا تجویز دی ہے خواتین جھوٹی شکایت کرتی ہیں کچھ ماہ میں کئی ایسے کیس آئے ہیں جس کی وجہ سے یہ سزا رکھی گئی ہے ۔اگر کمیٹی اس کو ختم کرنا چاہتی ہے تو ہمیں کوئی مسلہ نہیں ہے ۔سینیٹر مہرتاچ روغانی نے کہاکہ بل میں جھوٹا الزام ثابت ہونے پر بہت کم جرمانہ رکھا گیا ہے یہ 50ہزار نہیں 50 لاکھ ہوناچاہیے خواتین بھی جھوٹے الزام لگاتی ہیں اگر اس سزا کوختم کیا گیا تومیرا اس کے خلاف اختلافی نوٹ کو بل کے ساتھ شامل کیاجائے۔

شیریں مزاری نے کہاکہ 50 ہزارجرمانہ بھی زیادہ ہے اگر اس کوبھی کمیٹی ختم کرناچاہتی ہے تو ہمیں اس پر کوئی اعتراض نہیں ہے ۔چیئرمین کمیٹی نے کہاکہ جس طرح بل لایاجارہاہے اس سے مجھے ڈر ہے کہ لوگ خواتین کونوکری پر رکھے گئے ہی نہیں ہمیں اتنا سخت قانون نہیں بناناچاہیے اس سے خواتین کاہی نقصان ہوگا کہ ان کونوکری پر نہیں رکھاجائے گا۔خواتین سینیٹرز نے کہاکہ خواتین کوہ راساں ہونے سے بچانے کے لیے سخت قانون سازی کرنی ہوگی اس کے بعد ہم نیا قانون لے آئیں گے کہ کسی بھی ادارے میں مخصوص تعداد میں خواتین کی بھرتی لازمی کردی جائے اس طرح ہم اداروں کو پابندکریں گے کہ وہ خواتین کوبھرتی کریں ۔ تفصیل بحث کے بعد کام کی جگہوں پر خواتین کوہراساں کرنے سے تحفظ کاترمیمی بل پاس کرلیاگیا۔

ایم بی اے کی طالبہ کو ہراساں کرنا ساتھی طالب علم کو مہنگا پڑ گیا

یہ ہے لاہور، ایک ہفتے میں 51 فحاشی کے اڈوں پر چھاپہ،273 ملزمان گرفتار

طالبعلم کے ساتھ گھناؤنا کام کرنیوالا قاری گرفتار،قبرستان میں گورکن کی بچے سے زیادتی

راہ چلتی طالبات کو ہراساں اور آوازیں کسنے والا اوباش گرفتار

طالبات کو کالج کے باہر چھیڑنے والا گرفتار،گھر کی چھت پر لڑکی کے سامنے برہنہ ہونیوالا بھی نہ بچ سکا

پولیس کا قحبہ خانے پر چھاپہ،14 مرد، سات خواتین گرفتار

خاتون کے ساتھ زیادتی ،عدالت کا چھ ماہ تک گاؤں کی خواتین کے کپڑے مفت دھونے کا حکم

جناح ہسپتال کا ڈاکٹر گرفتار،نرسز، لیڈی ڈاکٹرز کی پچاس برہنہ ویڈیو برآمد

خواتین نرسزکی ویڈیو بنا کر بلیک میل کرنیوالے ملزم کی ضمانت پر ہوئی سماعت

ہنی مون پر گئے نوجوان نے موبائل فون خریدنے کیلئے بیوی کو فروخت کر دیا

ہولی فیملی ہسپتال سے بچہ اغوا ہونے پر لواحقین کا احتجاج

یہ ہے بزدار کا لاہور،دس روز میں 40 سے زائد بچے اغوا

نجی یونیورسٹی کی طالبہ کو اغوا کر کے زیادتی کرنیوالا ملزم گرفتار

رقم کی لین دین پر اغوا ہونے والا شخص بازیاب،ملزم گرفتار

پانچ سالہ معصوم بچے کیساتھ بدفعلی کی کوشش کرنے والا درندہ صفت ملزم گرفتار

مطیع اللہ ڈکیت گینگ کا سرغنہ ساتھیوں سمیت گرفتار

14 سالہ بچے سے زیادتی کرنے والا درندہ صفت سفاک ملزم گرفتار

قائداعظم یونیورسٹی میں ڈرگ مافیا سرگرم، ہم کچھ نہیں کرسکتے ہیں،پارلیمانی سیکرٹری برائے تعلیم کا انکشاف