fbpx

کیا کابینہ کو معلوم نہیں ہوتا ملک میں کیا ہو رہا ہے؟ عدالت

بلوچ طلبہ کے ساتھ جو کچھ ہو رہا ہے اس کو روکا جائے۔اسلام آباد ہائیکورٹ

کیا کابینہ کو معلوم نہیں ہوتا ملک میں کیا ہو رہا ہے؟ عدالت

اسلام آباد ہائیکورٹ کے چیف جسٹس اطہر من اللہ نے قائد اعظم یونیورسٹی کے لاپتہ طالب علم کی بازیابی اور بلوچ طالب علموں کو ہراساں کرنے سے روکنے کی درخواست پر سماعت کی۔

درخواست گزار کی طرف سے ایڈووکیٹ ایمان مزاری جبکہ وفاق کی جانب سے ڈپٹی اٹارنی جنرل سید محمد طیب شاہ عدالت میں پیش ہوئے ،ایمان مزاری نے عدالت کو بتایا کہ ایک بلوچ طالب علم ڈاکٹر دلدار بلوچ کو کراچی سے اٹھایا گیا جبکہ نمل یونیورسٹی کے ایک طالب علم کو پنجاب یونیورسٹی سے بھی اٹھایا گیا ہے ایسے لگتا ہے حکومت بلوچ اسٹوڈنٹس کے حوالے سے معاملے کو سنجیدہ نہیں لے رہی ایچ ای سی کو تمام یونیورسٹیز کو نوٹس جاری کرنا چاہیے تاکہ بلوچ طلبہ کو ہراساں نہ کیا جائے عدالتی حکم پر صدر مملکت کے ساتھ بلوچ طالب علموں کی دو میٹنگز ہوئی ہیں اور انہوں نے تحفظات دور کرنے کی یقین دہانی کرائی ہے

اسلام آباد ہائیکورٹ کے چیف جسٹس اطہر من اللہ نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ یہ حقیقی ایشوز ہیں طلبا کی نسلی پروفالنگ کیوں ہو رہی ہے؟ پھر تو وزارت انسانی حقوق کو بند کردیں یہ بچے ملک کا مستقل ہیں کیا کابینہ کو معلوم نہیں ہوتا ملک میں کیا ہو رہا ہے کیا جو اس وقت کابینہ میں ہیں وہ کل ان کے پاس نہیں جا رہے تھے؟ کیا ان کو نہیں پتہ؟ جب بھی کوئی حکومت میں نہیں ہوتا اس کی باتیں کچھ اور ہوتی ہیں حکومت میں آ کر سب بھول جاتے ہیں جمہوری سوسائٹی میں یہ سیاسی لیڈر شپ کا کام ہے وہ اس کا حل نکالے

اسلام آباد ہائیکورٹ کے چیف جسٹس اطہر من اللہ نے استفسار کیا کہ آئین کے مطابق اس سب کا کون ذمہ دار ہے؟ ایمان مزاری نے کہا چیف ایگزیکٹیو اور متعلقہ ادارے اس کے ذمہ دار ہیں عدالت نے بلوچ طلبا کی نسلی پروفائلنگ اور گمشدگیوں کی تحقیقات کے لیے کمیشن تشکیل دینے کا فیصلہ کرتے ہائے کمیشن ارکان کے نام تجویز کرنے کا کہا جس پر درخواست گزار نے چیئرپرسن ہیومن رائٹس کمیشن آف پاکستان حنا جیلانی، افرا سیاب خٹک، سمیع الدین بلوچ اور ڈاکٹر عبدالحمید نیر کے نام تجویز کیے.

کسی کی اتنی ہمت کیسے ہوگئی کہ وہ پولیس کی وردیوں میں آکر بندہ اٹھا لے،اسلام آباد ہائیکورٹ

پریس کلب پر اخباری مالکان کا قبضہ، کارکن صحافیوں نے پریس کلب سیل کروا دیا

صحافیوں کو کرونا ویکسین پروگرام کے پہلے مرحلے میں شامل کیا جائے، کے یو جے

کیا آپ شہریوں کو لاپتہ کرنے والوں کی سہولت کاری کر رہے ہیں؟ قاضی فائز عیسیٰ برہم

لوگوں کو لاپتہ کرنے کے لئے وفاقی حکومت کی کوئی پالیسی تھی؟ عدالت کا استفسار

لاپتہ افراد کیس،وفاق اور وزارت دفاع نے تحریری جواب کے لیے مہلت مانگ لی

عدالت امید کرتی تھی کہ ان کیسز کے بعد وفاقی حکومت ہِل جائے گی،اسلام آباد ہائیکورٹ

بلوچ طلبہ کی صدر پاکستان سے ملاقات کرائیں،عدالت کا حکم

مجھے صرف ایک ہی گانا آتا ہے، وہ ہے ووٹ کو عزت دو،کیپٹن ر صفدر

صحافیوں کا دھرنا،حکومتی اتحادی جماعت بھی صحافیوں کے ساتھ، بلاول کا دبنگ اعلان

سوشل میڈیا چیٹ سے روکنے پر بیوی نے کیا خلع کا دعویٰ دائر، شوہر نے بھی لگایا گھناؤنا الزام

میں نے صدر عارف علوی کا انٹرویو کیا، ان سے میرا جھوٹا افیئر بنا دیا گیا،غریدہ فاروقی

صحافیوں کے خلاف مقدمات، شیریں مزاری میدان میں آ گئیں، بڑا اعلان کر دیا

سپریم کورٹ نے صحافی مطیع اللہ جان کے اغوا کا نوٹس لے لیا