fbpx

کرتارپور راہداری ،وفود کی سطح کے مذاکرات کب ہوں گے؟اہم خبر

کرتارپور راہداری پر تکنیکی مذاکرات کا چوتھا دورہوا ،مذاکرات میں پاکستان اور بھارت کے تکنیکی ماہرین شریک ہوئے،

پاکستان کی طرف راہداری سے متعلق کام تکميل کے مراحل میں داخل ہو چکا ،بھارت کی طرف راہداری پر ابھی تک کام 50 فیصد بھی مکمل نہیں کیا گیا،

انٹرنیشنل سکھ کنونشن کا آغاز، سکھ برادری پاکستان کا امن پسند چہرہ دنیا کو دکھائے،فردوس عاشق

پاکستان،بھارت راہداری پر وفود کی سطح کےمذاکرات ستمبر کے پہلے ہفتےمیں ہونے کا امکان ہے،ستمبر کے پہلے ہفتے کی تاریخ بھارت کی طرف سے پیش کی گئی ہے،

انٹرنیشنل سکھ کنونشن میں گورنر پنجاب کے خطاب کے دوران سکھوں کے پاکستان زندہ باد کے نعرے

حکومت نے کرتارپور راہداری کو جلد از جلد مکمل کرنے کا فیصلہ کرلیا ، پاکستان سکھ کمیونٹی کو ہر ممکن سہولت پہنچائے گا اسی لیے پاکستان نے کرتارپورراہداری کو پاک بھارت تناؤ کی نذر نہیں ہونے دیا، اطلاعات کے مطابق کرتارپورراہداری پر جاری کام 31 اگست تک مکمل کرلیا جائےگا

کرتارپور راہداری کب کھولی جائے گی؟ گورنر پنجاب نے بتا دیا

مقبوضہ کشمیرمیں بھارتی مظالم پر پاکستان کا امن پسندی اور بڑے دل کا مظاہرہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ کرتارپورراہداری پرجاری کام آخری مراحل میں داخل ہوگیا ہے ، اس سلسلے میں احکامات دے دیئے گئے ہیں، دوسری طرف سے سکھ کمیونٹی بھی کرتارپور راہداری کی جلد تکمیل پر پاکستان کی کوشش کی معترف ہے

کرتارپورراہداری کا ہر صورت افتتاح کیا جائے گا، وزیر مذہبی امور

ذرائع کا کہنا ہے کہ دفترخارجہ نےکرتارپورکھولنے سے متعلق اپناہوم ورک تیزکردیا، کرتارپورراہداری کاافتتاح 11 نومبر کو پروقارتقریب میں کیاجائے گا ، تقریب سکھ برادری کے بانی باباگرونانک کی سالگرہ سےمتعلق ہوگی۔ذرائع کے مطابق وزیراعظم عمران خان راہداری کی افتتاحی تقریب میں شرکت کریں گے