fbpx

کسی بھی مکتبہ فکر کو کافر نہیں قرار دیا جا سکتا ،علامہ طاہر اشرفی

کسی بھی مکتبہ فکر کو کافر نہیں قرار دیا جا سکتا ،علامہ طاہر اشرفی

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق وزیراعظم کے معاون خصوصی اور پاکستان علما کونسل کے چیئرمین حافظ محمد طاہر محمود اشرفی نے کہا ہے کہ پاکستان کا ہمیشہ سے یہ موقف رہا ہے کہ افغانستان کے مسئلے پر مذاکرات کا راستہ اختیار کیا جائے،

علامہ طاہر محمود اشرفی کا کہنا تھا کہ جنگ کسی مسئلے کا حل نہیں ہے، اپنے ملک کے اندر فساد پیدا کرنے کی کوششیں کرنے والوں کے معاون نہ بنیں بلکہ ان کو روکنے والے بنیں۔ وطن عزیز پاکستان کو اللہ تبارک تعالیٰ نے ہمیشہ سرخرو رکھا ہے، افغانستان کے مسئلے پر پاکستان کی افواج اور حکومت کا جو موقف تھا اسے آج پوری دنیا نے تسلیم کیا ہے پاکستان کا ہمیشہ سے یہ موقف تھا کہ افغانستان کے مسئلے پر مذاکرات کا راستہ اختیار کیا جائے، عسکریت، جنگ کسی مسئلے کا حل نہیں ہے وزیراعظم عمران خان نے جو موقف آج سے پندرہ سال پہلے بلکہ آغاز میں اختیار کیا تھا اس کو اللہ تعالیٰ نے پذیرائی دی۔گزشتہ 10 دن کے دوران پوری دنیا کا مرکز پاکستان بن گیا، یورپ، برطانیہ، امریکا ، عرب و اسلامی دنیا سب کے روابط پاکستان کے ساتھ ہو رہے ہیں، سعودی ولی عہد امیر محمد بن سلمان، ابوظہبی کے ولی عہد شیخ محمد بن زید، قطر کے امیر امیر تمیم نے بھی وزیراعظم عمران خان کے ساتھ افغانستان کے مسئلے پر تفصیلی تبادلہ خیال کیا کیونکہ ہم سمجھتے ہیں کہ پاکستان کا امن افغانستان کا امن ہے اور اس خطے کا امن ہے۔

علامہ طاہر محمود اشرفی کا کہنا تھا کہ جب ہندوستان کو افغانستان میں اتنی بڑی ہزیمت اٹھانا پڑی تو اس کی کوشش اور خواہش ہے کہ وہ پاکستان کے اندر فسادات پیدا کرے، محرم الحرام کے آغاز کے ساتھ ہی سوشل میڈیا پر کوشش کی گئی کہ ایسا مواد پھیلایا جائے کہ شیعہ سنی فساد پیدا ہو لیکن اللہ کا شکر ہے کہ ملک کے سلامتی کے اداروں، علماءکی کوششوں، مشائخ کے روابط اور حکومت کی گرفت سے اور پیغام پاکستان ضابطہ اخلاق پر عمل سے، یہ کام نہ ہو سکا لیکن اب ہم دیکھ رہے ہیں کہ کچھ ایسے عناصر ہیں جو چیزوں کو خراب کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔ پیغام پاکستان ضابطہ اخلاق واضح ہے کہ کسی کو بھی تکفیر، توہین نہیں کرنے دی جائے گی ،مقدسات جو تمام مکاتب فکر کے مقدم ہیں، مقدسات کی توہین نہیں کرنے دی جائے گی، اسی طرح کسی بھی مکتبہ فکر کو کافر نہیں قرار دیا جا سکتا۔

شاہ سلمان کی طبیعت بگڑ گئی،سعودی عرب خطرناک راستے پر،اہم انکشافات ،سنئے مبشر لقمان کی زبانی

محمد بن سلمان نے سابق جاسوس کے قتل کیلئے اپنا قاتل سکواڈ کینیڈا بھیجا

کوئی پگڑی والا ہے یا داڑھی والا، محمد صلی اللہ علیہ وسلم سے محبت سب کے ایمان کا حصہ ہے،علامہ طاہر اشرفی

وزیراعظم  نے مکہ میں دوران طواف 3 مرتبہ مجھے کیا کہا؟ طاہر اشرفی کا اہم انکشاف

سن لیں، یہ کام کرنیوالوں کو معاف نہیں کیا جائے گا،علامہ طاہر اشرفی کا دبنگ اعلان

خواتین کو تعلیم سے روکنا جہالت،گزشتہ 7ماہ سے انتشار کا کوئی واقعہ نہیں ہوا،طاہر اشرفی

علامہ طاہر محمود اشرفی کا کہنا تھا کہ نے ملک کے تمام علماءو مشائخ سے درخواست کی کہ حکومت نے جو اقدامات اٹھانے ہیں جہاں پر کوئی کمی ہے، جہاں پر کسی نے کوئی زیادتی کی ہے اس کو اٹھا رہے ہیں لیکن ملک کی فضا کو دانستہ یا نادانستہ طور پر ایسا نہ بنایا جائے جس سے ملک کے اندر 90 والا یا اس کے بعد والا ماحول پیدا ہو۔ انہوں نے کہا کہ تمام مکاتب فکر کو اپنے مسلک کو چھوڑو نہیں اور کسی دوسرے کے مسلک کو چھیڑو نہیں، پر عمل کرنا ہے۔ انہوں نے ذاکرین، واعظین اور خطبا سے اپیل کی کہ وہ پیغام پاکستان ضابطہ اخلاق پر عمل کریں اور یہ جو ملک کے اندر اشتعال پیدا کرنے کی فضاءبنائی جا رہی ہے،ایک دوسرے کے عقائد کے اوپر ایسی گفتگو کی جا رہی ہے جو بہر حال اشتعال کا سبب بنے اس کو بند ہونا چاہیے، حکومت نے جو اقدامات اٹھانے ہیں وہ اٹھا رہی ہے اور آئندہ بھی اٹھائے گی لیکن کسی کو قانون کو ہاتھ میں نہیں لینے دیا جائے گی۔