fbpx

کوئی کشمیرکا سفیررہا ہے تووہ شہید بھٹو ہے، جعلی سفیر کو نہیں مانتے، بلاول

کوئی کشمیرکا سفیررہا ہے تووہ شہید بھٹو ہے، جعلی سفیر کو نہیں مانتے، بلاول

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول زرداری نے مظفر آباد میں پارٹی کے یوم تاسیس کے جلسہ سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پیپلز پارٹی نے کشمیر پر سودا قبول نہیں کیا،ذوالفقارعلی بھٹوکشمیرکے سفیرتھے ذوالفقار علی بھٹو نے لاہور میں لوگوں کو جمع کیا اور کشمیر کی بات کی ،بھٹو شہید کشمیر کا مقدمہ جہاں رکھتے بھارتی سفیر کا پسینہ نکل جاتا تھا ،مودی انتہا پسند ہے،پیپلزپارٹی کاکشمیر سےرشتہ پہلےدن سےہے،پیپلزپارٹی نےمسئلہ کشمیرپراہم کرداراداکیا،پیپلزپارٹی ہمیشہ کشمیرکی محافظ رہی

بلاول زرداری کا مزید کہنا تھا کہ کوئی کشمیرکا سفیررہا ہے تووہ شہید بھٹو ہے ،مودی پورے خطے کے امن کیلیے خطرہ ہے، ہم پہلے دن سے کہہ رہے ہیں نریندر مودی کو پہچانو، مودی انتہا پسند سوچ رکھتا ہے، بھارتی وزیراعظم ایک انتہا پسند سوچ رکھنے والا شخص ہے،
خصوصی حیثیت ختم کرکے کشمیریوں کی تقسیم کی کوشش کی جارہی ہے،مہذب معاشرے میں امیر اور غریب میں فرق نہیں ہوتا،آج معیشت اور خارجہ پالیسی ناکام ہوچکی ہے

بلاول زرداری کا مزید کہنا تھا کہ یہ کیسی جمہوریت ہے کہ پارلیمان بند پڑا ہے،بتایا جائے15 ماہ میں عوام کی فلاح کیلیےکیا کیا گیا؟ ٹیکس کا نظام بہتر کرنا ہوگا لیکن ایسے نہیں جیسے یہ کررہے ہیں،سندھ میں سیلز ٹیکس باقی صوبوں سے کم ہے،سیاست اب عوام نہیں امپائر کو خوش کرنا ہے،سیاست کا محور اب عوام کو صرف سبز باغ دکھانا ہے،ایک سال میں ایک قانون پاس نہیں کراسکے،یہ پارلیمان میں یکجہتی کیسے پیدا کریں گے،

بلاول زرداری نے مزید کہا کہ سی پیک کو کسی صورت متنازعہ نہیں بننے دیں گے،حکومت کو سی پیک پر یوٹرن نہیں لینے دیں گے، نالائق حکومت نے سی پیک کو ہی متنازعہ بنادیا،نالائق نااہل سلیکٹڈ نیازی کان کھول کر سن لو،شہید بھٹو کے شروع کردہ، بینظیر بھٹو اور زرداری صاحب نے اس تعلق کو آگے بڑھایا،ہم تمہیں ایسا کرنے نہیں دیں گے

بلاول زرداری نے مزید کہا کہ بقول چیف جسٹس آپ نے سپہ سالار کو شٹل کاک بنا دیا اب یہ معاملہ پارلیمان میں آئے گا جن سے ایک نوٹیفکیشن نہیں بن سکا آج تک کوئی ایک قانون پاس نہیں کر سکے وہ اب کیسے پارلیمان میں اتفاق رائے پیدا کریں گے اتنی اہم قانون سازی پر وہ بھی چھ مہینے کے اندر،دیکھتے ہیں،

بلاول زرداری کا مزید کہنا تھا کہ 27دسمبر کو بینظیر بھٹو کی برسی لیاقت باغ راولپنڈی میں منائیں گے،یہ حکومت ملکی سلامتی کے لیے خطرہ بن چکی ہے،مجھے فخر ھے کہ آج میں ان لوگوں کے ساتھ ھوں جنھوں نے میرے نانا شھید بھٹو کے ساتھ اور میری ماں شھید بینظیر بھٹو کے ساتھ کام کیا اور ھمیشہ جھموریت کے لییے کیا۔

بلاول زرداری نے وزیراعظم عمران خان پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ کٹھ پتلی کہتا ہے کہ میں کشمیریوں کا سفیر ہوں ،یہ کیسا سفیر ہے کہ کشمیر میں لاک ڈاؤن ہے اور اس نے ایک ملک کا بھی دورہ نہیں کیا،نہ کسی ملک میں کوئی وفد نہیں بھیجا،میں آپ کو یقین دلاتا ہوں کہ
ہم کشمیر کا مقدمہ لڑوں گا،محترمہ بے نظیر بھٹو نے کہا تھا کہ جہاں کشمیریوں کا پسینہ گرے گا وہاں ہمارا خون گرے گا

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.