fbpx

کوئی رول آف لا نہیں ،تباہی کی جاری ہے،صرف طاقتوروں کو سہولت کیوں؟ اسلام آباد ہائیکورٹ کا بڑا حکم

کوئی رول آف لا نہیں ،تباہی کی جاری ہے،صرف طاقتوروں کو سہولت کیوں؟ اسلام آباد ہائیکورٹ کا بڑا حکم

اسلام آباد ہائی کورٹ میں مارگلہ نیشنل پارک میں غیر قانونی تعمیرات سے متعلق کیس کی سماعت ہوئی

مارگلہ نیشنل پارک کی 8 ہزار ایکٹر زمین کی الاٹمنٹ بادی النظر میں غیر قانونی قرار دے دی گئی،عدالت نے وفاقی حکومت کو 2016 میں زمین دینے کے نوٹیفکیشن پر نظر ثانی کا حکم دے دیا .اسلام آباد ہائی کورٹ کے چیف جسٹس اطہر من اللہ نے اٹارنی جنرل خالد جاوید خان کو ہدایت کر دی،عدالت نے مارگلہ کی پہاڑی پر قائم ریسٹورنٹ کی پٹشن واپس لینے کی درخواست مسترد کردی ،عدالت نے کہا کہ وفاقی حکومت ماحولیاتی تبدیلی کا ذکر کرتی ہے لیکن نیشنل پارک بے یارو مددگار ہے،کوئی رول آف لانہیں ہے وائلڈ لائف مینجمنٹ بورڈ کا کام ہے کہ وہ نشاندہی کرے،وائلڈ لائف مینجمنٹ بورڈکی توجہ صرف ٹریل فور فائیو اور سکس پر مرکوز ہے

اسلام آباد ہائیکورٹ کے چیف جسٹس اطہرمن اللہ نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ انوائرمنٹل ایجنسی مکمل بے یارو مدد گار ہے، 8ہزار ایکٹر زمین دے دی گئی جو قانونی طور پر نہیں دے سکتے،عدالت وفاقی حکومت کو کہتی ہے کہ آئندہ نسلوں کو بچائیں،پروفیسر زیڈ بی مرزا نے کتابیں لکھی ہیں لیکن ایسے لوگوں کو کوئی نہیں پوچھتا، وفاقی حکومت نے کس طرح 8ہزار ایکٹر زمین الاٹ کردی؟ مارگلہ نیشنل پارک میں جو کچھ بچ گیا وفاقی حکومت بہتر اقدامات اٹھائے،وفاقی حکومت سروے کرائے اور نیشنل پارک میں ہر قسم کی تعمیرات روکے،کیوں نہ ہدایت کرے کہ مارگلہ نیشنل پارک پر قبضہ کرنے والوں کےنام پبلک ہونے چاہییں،انوائرمنٹل ایجنسی نہ ہی وائلڈ لائف مینجمنٹ بورڈ اپنا کام کر رہا ہے،سی ڈی اے نے لوگوں کو سوائے پلاٹ دینے کے کچھ نہیں کیا، خیبر پختونخوا کی جانب اسلام آباد کے بارڈر پر نیشنل پارک میں تباہی کی جاری ہے، کوئی غریب ، کمزور نہیں بلکہ سارے طاقت ور یہ قبضے کر رہے ہیں،آرٹیکل 173 کے تحت صرف وفاقی حکومت جگہ لے سکتی ہے مارگلہ کی پہاڑ ی پر ہوٹل کی تعمیر کسی کی خواہش پر کی گئی تھی یہ بھی ایک ہسٹری ہے،سی ڈی اے صرف طاقتوروں کو سہولت دیتی آئی ہے، عدالت نئ اٹارنی جنرل سے مکالمہ کرتے ہوئے کہا کہ جہاں میں بیٹھا ہوں آپ بیٹھیں تو جان جائیں کتنی لاقانونیت ہے، عدالت نے معاملہ وفاقی حکومت کو بھیجتے ہوئے سماعت 8 دسمبر تک ملتوی کردی

میرا کچرا،میری ذمہ داری،برطانوی ہائی کمشنر ایک بار پھر مارگلہ کی پہاڑیوں پر پہنچ گئے

وزیراعظم کی رہائشگاہ بنی گالہ کے قریب کسی بھی وقت بڑے خونی تصادم کا خطرہ

مارگلہ کے پہاڑوں پر قبضہ،درختوں کی کٹائی جاری ،ادارے بنے خاموش تماشائی

سپریم کورٹ کا مارگلہ ہلز میں مونال ریسٹورنٹ کے حوالہ سے بڑا حکم

مارگلہ ہلز ، درختوں کی غیرقانونی کٹائی ،وزارت موسمیاتی تبدیلی کا بھی ایکشن

 ماحولیاتی منظوری کے بغیر مارگلہ ایونیو کی تعمیر کیس پر فیصلہ محفوظ 

جو نقشے عدالت میں پیش کئے گئے وہ سب جعلی،یہ سب ملے ہوئے ہیں، مارگلہ ہلز کیس میں چیف جسٹس کے ریمارکس

نور مقدم قتل کیس، ظاہر جعفر پر ایک اور مقدمہ درج

مارگلہ کی پہاڑیوں پر تعمیرات پر پابندی عائد

Facebook Notice for EU! You need to login to view and post FB Comments!