کراچی پولیس آفس پر حملےکا مقدمہ سی ٹی ڈی تھانے میں درج

0
42

کراچی پولیس آفس (کے پی او) پر حملےکا مقدمہ کاؤنٹرٹیررازم ڈیپارٹمنٹ (سی ٹی ڈی) تھانے میں درج کرلیا گیا-

باغی ٹی وی: مقدمہ صدر تھانے کے ایس ایچ او کی مدعیت میں درج کیا گیا ہے،پولیس حکام کے مطابق مقدمہ الزام نمبر 20، 18 فروری کو شام4 بج کر 30 منٹ پر درج کیا گیا، مقدمے میں دہشت گردی، قتل اور اقدام قتل سمیت دیگر دفعات شامل ہیں مقدمے میں دھماکا خیز مواد 3 اور 4 کی دفعہ بھی شامل کی گئی ہے۔

کراچی پولیس آفس پر حملہ کرنیوالے 2 دہشتگردوں کی شناخت ہوگئی

مقدمےکے متن کے مطابق ایس ایچ او کا کہنا ہےکہ شام 7 بج کر 15منٹ پر وائرلیس کے ذریعے حملےکی اطلاع ملی، 7 بج کر 20 منٹ پرجائے وقوع پر پہنچا اور نفری طلب کی، ڈی آئی جی عرفان بلوچ کی سربراہی میں دہشت گردوں کے خلاف آپریشن ترتیب دیا گیا۔

متن کے مطابق حملےمیں تین دہشت گرد ملوث تھےایک دہشتگرد چوتھی منزل پر جوابی کارروائی میں مارا گیا، ایک دہشت گرد نے تیسری منزل پر خود کو دھماکے سے اڑایا، تیسرا دہشت گرد بھی چھت پرجوابی کارروائی میں مارا گیاکارروائی میں مارےگئے دونوں دہشت گردوں نے بھی خود کش جیکٹ پہنی ہوئی تھی، خودکش دھماکا کرنے والے دہشت گرد کے اعضا ملے ہیں۔

کراچی پولیس آفس حملے میں ملوث دہشتگرد کے گھر پر چھاپہ، اہلخانہ کےچونکا دینےوالے…

مقدمےکے متن کے مطابق دہشت گرد صدر پولیس لائن کے قریب بنے فیملی کوارٹر کی عقبی دیوار پر لگی تارکو کاٹ کر داخل ہوئے، 3 دہشت گرد گاڑی میں سوار ہوکر پولیس صدر لائن پہنچے تھےصدر پولیس لائن کے قریب کھڑی کار کو تحویل میں لے لیا ہے-

مقدمےمیں کہا گیا کہ کارسوار دہشتگردوں کے ساتھ 2 دہشت گرد موٹرسائیکل پر بھی آئے تھے، موٹر سائیکل پر آئے دہشت گردوں نےکار سوار دہشت گردوں کو کے پی او کی نشاندہی کی تھی، دہشتگردوں سے 5 دستی بم ، 2خودکش جیکٹس ملیں جنہیں ناکارہ بنایا گیا۔

مقدمے میں کہا گیا کہ حملے میں رینجرز اور پولیس کے 4 افراد شہید ہوئے، حملے میں 18 افراد زخمی ہوئے، حملے کی ذمہ داری کالعدم تحریک طالبان نے سوشل میڈیا کے ذریعے قبول کی-

ہلاک دہشتگردوں سے 2 خودکش جیکٹس، 8 دستی بم اور 3 گرنیڈ لانچر ملے، بم ڈسپوزل اسکواڈ

Leave a reply