fbpx

لال سنگھ چڈھا کا سکرپٹ سننے سے قبل عامر خان نے ٹال مٹول سے کام کیوں لیا؟

عامر خان کی فلم لال سنگھ چڈھا جو کہ 11 اگست کو ریلیز ہونے جا رہی ہے اس فلم کے بہت چرچے ہیں، چرچے اس لئے بھی ہیں کیونکہ یہ فلم نہ صرف ہالی وڈ فلم فارسٹ گمپ کا ری میک پے بلکہ عامر خان اس میں کام کررہے ہیں. عامر خان جب بھی کوئی فلم بناتے ہیں اسکا موضوع روٹین سے ہٹ کر اور الگ ہوتاہے. فلم لال سنگھ چڈھا کی ایک طرف عامر خان خوب پرموشن کررہے ہیں دوسری طرف انہیں اس چیز کا بھی دکھ ہے کہ ان کی فلم کے بائیکاٹ کا بلاوجہ ٹرینڈ چل رہا ہے. اپنے حالیہ انٹرویو میں عامر خان نے کہا ہے کہ جب مجھے بتایا گیا کہ لال سنگھ چڈھا ہالی وڈ‌فلم فارسٹ گمپ کا ری میک ہے تو سکرپٹ سننے سے پہلے ہی

مجھےمحسوس ہوا کہ یہ فلم ایسی ہی ہے جیسے کہ مغل اعظم یا مدر انڈیا کو ری میک کیا جائے، لہذا فلم کا سکرپٹ سننے کے لئے ٹال مٹول سے کام لیا. یعنی مجھے لگا کہ یہ بہت ہی مشکل کام ہے تو یقینا یہ مشکل کام تو تھا. کیونکہ اس فلم کو بنانے میں ہی 14 سال لگ گئے اور 8 نو سال تو صرف فلم کے حقوق حاصل کرنے میں ہی لگ گئے تھے. یوں عامر خان نےلال سنگھ چڈھا کو بنانے کے نقطہ نظر سے مشکل ترین فلم قرار دےدیا. یاد رہے کہ فلم میں کرینہ کپور بھی ہیں اور عامر خان کا دعوی ہے کہ انہوں نے ایک بہترین فلم تیار کی ہے اور ان کا یہ بھی کہنا ہے کہ اگر فلم شائقین کو پسند نہ آئی تو انہیں بہت برا لگے گا.