ای سگریٹ کے مارکیٹ میں سرعام فروخت کی اجازت

0
54

سگریٹ نوشی مضر صحت، بیماریوں کا باعث تا ہم حکومت کی جانب سے اب ای سگریٹ کے مارکیٹ میں سرعام فروخت کی مشروط طور پر اجازت دے دی گئی ہے

میڈیا رپورٹس کے مطابق وفاقی وزارت صحت نے ای سگریٹ کے بازار میں عام فروخت کی اجازت دے دی ہے، الیکٹرانک سگریٹ، سگار، پاکٹ سائز شیشہ اب بازار میں جنرل سٹورز، پان کی دکانوں پر فروخت ہو سکیں گے،اس ضمن میں وزارت صحت نے مشروط اجازت دے دی ہے، وزارت صحت کے مطابق تمباکو ہیٹڈ پروڈکٹس کیلئے ان کے 65 فیصد حصے پر مضر صحت کی وارننگ شائع کرنا لازم ہو گی، فیصلہ تمباکو نوشی کی تمام اقسام کو ضابطے کے تحت لانے کیلئے کیا گیا ،وزارت صحت کا کہنا ہے کہ عالمی ادارہ صحت کا تمباکو کنٹرول سے متعلق کنونشن بھی تمباکو پر پابندی یا اسے ریگولرائز کرنے کی اجازت دیتا ہے

دوسری جانب طبی ماہرین نے فیصلے پر شدید تحفظات کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ ٹوبیکو ہیٹڈ پروڈکٹس بھی عام سگریٹس کی طرح ہی مضر صحت ہیں ، تمباکو نوشی کے خلاف کام کرنے والی غیر سرکاری تنظیم کرومیٹک کے سی ای او شارق خان کا کہنا ہے کہ سگریٹ کے علاوہ تمباکو کی نئی مصنوعات (ای سگریٹ، نکوٹین پاؤچز، ویپنگ اور چیونگم) بھی پاکستانی مارکیٹ میں آسانی سے دستیاب ہیں جو نوجوانوں کے لیے تباہ کن ہیں۔تمباکو کی جدید پراڈکٹس میں نیکوٹین شامل ہوتی ہے جو کہ نشہ کی بہت سی دوسری اقسام میں سے ایک ہے۔ نکوٹین نوجوان نسل میں جسمانی اور ذہنی صحت کے سنگین مسائل پیدا کر سکتی ہے۔ تمباکو مصنوعات بنانے والوں کا دعویٰ ہے کہ تمباکو کی جدید مصنوعات کے ذریعے وہ سگریٹ نوشی کے خاتمے کے لئے کام کررہے ہیں لیکن درحقیقت یہ نشے کی ہی نت نئی اقسام بنارہے ہیں،

ہیلتھ لیوی اور اس کا مختلف ممالک میں نفاذ :

ہیلتھ لیوی ،حکومت توجہ کرے، تحریر:نایاب فاطمہ

پاکستان میں تمباکو کی مصنوعات پر ہیلتھ لیوی!!! — بلال شوکت آزاد

ہیلتھ لیوی کیا ہے اور اس کے کیا فواٸد ہیں:

ہیلتھ لیوی – کیا؟ کیوں؟ اور کیسے؟ — طوبہ نعیم

” ہیلتھ لیوی کے نفاذ میں تاخیر کیوں” تحریر: افشین

تمباکو جیسی مصنوعات صحت کی خرابی اور پیداواری نقصان کا سبب بنتی ہیں

ویسے تو ہیلتھ لیوی کی منظوری 2019جون میں ہوچکی ہے

ہیلتھ لیوی ،تحریر:ڈاکٹرغلام مصطفی بڈانی

تمباکو پر ہیلتھ لیوی ٹیکس – ایک جائزہ ،تحریر: راجہ ارشد

Leave a reply