fbpx

لکشمی چوک پولیس مقابلے کی 2 ایف آئی آر درج

قلعہ گجر سنگھ کے علاقے لکشمی چوک میں ڈولفن اہلکاروں کی فائرنگ کے واقعہ کی پولیس نے 02 ایف آئی آر درج کر لیں.

پہلی ایف آئی آر فوڈ شاپ پر ملازم پطرس مسیح کی مدعیت میں غضنفر علی اور کامران کے خلاف درج کی گئی،ایف آئی آر کے مطابق غضنفر علی اور کامران نے منشیات کی خرید و فروخت کی رنجش میں مدعی پطرس مسیح کو فائرنگ کرکے زخمی کیا، ملزمان کا فائر مدعی پطرس مسیح کی دائیں پنڈلی پر لگا،مدعی پطرس مسیح نے ایف آئی آرمیں موقف تھا کہ ملزمان نے جان سے مارنے کی نیت سے فائرنگ کی.

قلعہ گجر سنگھ پولیس نے دوسری ایف آئی آر سب انسپکٹر محمد مدثر خان کی مدعیت میں درج کی،دوسری ایف آئی آر کے مطابق پولیس فائرنگ کی اطلاع پر لکشمی چوک پہنچی تو ملزمان پطرس مسیح کو مضروب کرکے فرار ہو رہے تھے،ڈولفن ٹیم 308 نے ملزمان کو گرفتاری کے لئے تعاقب کیا،ملزم غضنفر علی نے ڈولفن ٹیم پر سیدھی فائرنگ کی، ڈولفن ٹیم نے حق حفاظت خود اختیاری استعمال کرتے ہوئے اپنے آپ کو بچانے کے لئے جوابی فائر کیا،کراس فائرنگ میں مسمی کامران ہلاک جبکہ غضنفر علی زخمی ہوا،ملزم غضنفر علی کے سے 30بور لوڈڈ پسٹل اور دو لوڈ شدہ میگزین برآمد ہوئے،ایف آئی آر مین مذید کہا گیا کہ ملزمان نے کار سرکار میں مداخلت کرکے پولیس پارٹی پر سیدھی فائرنگ کی.

یاد رہے کہ لاہور کے علاقے لکشمی چوک میں پولیس مقابلے کے دوران پولیس اہلکار ڈولفن اہلکاروں کی فائزنگ سے ہلاک ہو گیا تھا.عینی شاہد کے مطابق پولیس کے ہاتھوں مارے گئے کانسٹیبل کامران کا منشیات فروش پطرس سے جھگڑا ہوا، جس کی فائرنگ سے پطرس زخمی ہوگیا۔ اہل علاقہ کے مطابق فائرنگ کے بعد کامران اپنے بہنوئی غضنفر کے ہمراہ موٹر سائیکل پر فرار ہوگیا، جس پر ڈولفن اہلکاروں نے اُس کا تعاقب کیا اور انہیں روکنے کی کوشش کی۔

اہل خانہ کے مطابق کامران کے نہ رکنے پر ڈولفن اہلکاروں نے فائرنگ کی، جس میں وہ مارا گیا جبکہ اُس کا بہنوئی غضنفر زخمی ہوا۔اہل خانہ کے مطابق ڈولفن اہلکاروں کی فائرنگ میں مارا گیا اہلکار کامران فی الحال نوکری سے معطل تھا۔ پولیس کے مطابق واقعے کے بعد مارے گئے کانسٹیبل کامران کی لاش اور 2 زخمیوں کو اسپتال منتقل کردیا گیا ہے۔