جموں سرینگر قومی شاہراہ دوسرے روز بھی بند

0
34

جموں :سخت سردی اوربرفباری نے کشمیرمیں‌پھرسے اپنے قدم مضبوط کرلیے ہیں،اطلاعات کے مطابق بھارت کے زیرقبضہ جموں‌وکشمیر کے مختلف علاقوں میں لینڈ سلائڈنگ کی وجہ سے مسافروں کو بڑی پریشانی کا سامنا کرنا پڑرہا ہے ،ادھرجموں و کشمیر کے ضلع رامبن میں ڈیگڈول کے قریب قومی شاہراہ پر زمین اور چٹانیں کھسکنے کے بعد آج اور سرینگر کے درمیان گاڑیوں کی آمد و رفت مسلسل دوسرے دن بھی معطل رہیں۔

اسرائیل لیز پر دی گئی زمین واپس کردے اردن کی درخواست

ٹریفک پولیس کے مطابق گذشتہ روز 270 کلو میٹر لمبی جمو ں سرینگر قومی شاہراہ پر بھاری چٹانیں کھسک آنے سے سڑک نقل و حرکت دوبارہ بند ہو گئیں جس کی وجہ سے تقریبا دو ہزار گاڑیاں پھنس گئیں۔جس کی وجہ سے لوگ بہت پریشان دکھائی دے رہے ہیں‌، یہ بھی معلوم ہوا ہےکہ بھارتی فوج نے بھی اس ٹریفک جام کی آڑ میں گاڑیوں کی تلاشی لینی شروع کردی ہے

پاکستان نے پہل کردی بھارت کو بھی رویے بدلنے ہوں گے ،منموہن سنگھ

سری نگر سے ذرائع کے مطابق جموں سرینگر قومی شاہراہ دوسرے روز بھی بندٹریفک پولیس کے عہدیدار نے کہا کہ چٹانیں ہٹانے کا کام شروع کر دیا گیا شاہراہ کو پھر سے بحال کرنے میں تیزی لائی جائی رہی ہے اور سڑک بحال ہوتے ہی مسافروں کو جانے کی اجازت دے دی جائیگی۔

طوفانی بارش سے نظام زندگی درہم برہم

گذشتہ روز رامبن کے مہد کے مقام پر صبح سویرے صرف ایک گھنٹے کے لیے گاڑیوں کو جانے کی اجازت دی گئی تھی لیکن اس سے قبل شاہراہ پر بھاری چٹانیں گرگئیںجس کی وجہ سے شاہراہ دوبارہ بند ہوگئی ۔7نومبرکو جوہر ٹنل کے مقام پر بھاری برف باری اور رامسو اور ناشری سمیت کئی مقامات پر مسلسل بارش کے سبب جموں سرینگر شاہراہ کو آمدو رفت کے لیے بند کر دیا گیا تھا۔

Leave a reply