fbpx

شانگلہ میں لینڈسلائیڈنگ 9افراد دب گئے: دو بچے جاں بحق:سخت موسمی حالات

پشاور: شانگلہ میں لینڈسلائیڈ سے دو بچے جاں بحق:سخت موسمی حالات ،اطلاعات کے مطابق خیبرپختونخوا کے ضلع شانگلہ میں ایک گھر لینڈ سلائیڈ کی زد میں جس کے نتیجے میں دو بچے جاں بحق ہوئے جبکہ خاندان کے 9 افراد دب گئے۔

انتظامیہ کے مطابق جاں بحق دو بچوں سمیت 6 افراد کو ملبے سے نکال لیا گیا ہے جبکہ دیگر 3 افراد کا سراغ لگانے کے لیے کوششیں جاری ہیں۔

شانگلہ کے ڈپٹی کمشنر ضیاالرحمٰن کا کہنا تھا کہ شدید لینڈ سلائیڈنگ سے شانگلہ کے علاقے کوز الپوری کے رہائشی خورشید خان کا گھر زد میں آیا اور گھر مکمل طور پر زیر زمین آگیا اور تمام مکین بھی دب گئے۔ ڈپٹی کمشنرنے کہا کہ ریسکیو 1122 کے اہلکار ملبے میں دبے میں دیگر افراد کو نکالنے کے لیے کوششوں میں مصروف ہیں۔

ڈپٹی کمشنر کے مطابق دو بچوں اور 4 خواتین کو ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹڑز ہسپتال الپوری لایا گیا تھا جہاں دو بچے جاں بحق ہوگئے تاہم خواتین کو طبی امداد دی جارہی ہے۔انہوں نے بتایا کہ جاں بحق دونوں بچوں کی عمریں بالترتیب تین سال اور دو ماہ تھیں۔

ریسکیو 1122 کے ترجمان رسول خان نے بتایا کہ لینڈ سلائیڈ کے ملبے میں 9 افراد دب گئے تھے اور 6 افراد کو نکال لیا گیا ہے۔ان کا کہنا تھا کہ بشام-سوات روڈ بھی لینڈ سلائیڈنگ کی وجہ سے بلاک ہوگیا ہے اور دونوں اطراف گاڑیاں پھنسی ہوئی ہیں۔شانگلہ کے ڈپٹی کمشنر نے بتایا کہ ڈسٹرکٹ ہیڈکوارٹرز ہسپتال میں ایمرجنسی نافذ کردی گئی ہے۔

خیال رہے کہ رواں ماہ کے اوائل میں خیبر پختونخوا میں مسلسل 6 روز سے جاری بارش اور برفباری سے مختلف واقعات میں کم از کم 10 افراد جاں بحق اور 13 افراد زخمی ہوگئے تھے۔متعلقہ حکام کے مطابق ضلع دیر بالا میں 2 علیحدہ واقعات میں 4 بچوں سمیت 6 افراد جاں بحق ہوئے۔

ضلع مردان کی تحصیل تخت بھائی میں بارشوں کے باعث گھر کی چھت گرنے سے ایک 8 سالہ بچی جاں بحق ہوگئی جبکہ اس کے خاندان کے 5 افراد شدید زخمی ہوگئے تھے۔ضلع خیبر میں بارش سے ہونے والی تباہی کے نتیجے میں 8 افراد جاں بحق ہوگئے تھے۔