اسرائیل کوتسلیم کرنے کے حوالےسے پاکستانی صحافی مبشرلقمان کی گفتگوبڑی اہمیت کی حامل ہے:اسرائیلی اخبار”یروشلم پوسٹ”

یروشلم :اسرائیل کوتسلیم کرنے کے حوالےسے پاکستانی صحافی مبشرلقمان کی گفتگوبڑی اہمیت کی حامل ہے:اسرائیلی اخباریروشلم کا دعویٰ ،اطلاعات کے مطابق اسرائیلی معروف اخبار یروشلم پوسٹ نے پاکستان کے معروف صحافی مبشرلقمان کی پاکستان پراسرائیل کوتسلیم کرنے کے حوالے سے گفتگو بڑی اہمیت کی حامل ہے

یروشلم پوسٹ کا کہنا ہے کہ پاکستان کے اس صحافی نے جوخطرات اورخدشات بیان کیئے ہیں وہ قابل غورہیں ،یروشلم پوسٹ کا دعویٰ ہے کہ مبشرلقمان کا یہ کہنا کہ پاکستان پراس وقت کچھ ممالک کی طرف سے اسرائیل کوتسلیم کرنے کے حوالے سے بالواسطہ اوربلا واسطہ دبوضرور ہے

 

یروشلم پوسٹ کے مطابق 24 نیوز کو انٹرویو دیتے ہوئے کہا کہ ممتاز پاکستانی صحافی مبشرلقمان کہتے ہیں کہ سعودی عرب اسرائیل کو تسلیم کرنے کے لئے اسلام آباد پر دباؤ ڈالنے والا ملک ہے۔

یروشلم پوسٹ کا کہنا کہ مبشرلقمان کا بیان پاکستانی وزیر اعظم عمران خان کے اس بیان کے بعد ہے کہ امریکہ اور دیگر بے نام ممالک نے اسرائیل کو تسلیم کرنے کے لئے اسلام آباد کو "دباؤ میں” رکھا ہے۔

 

 

اخبار کے مطابق مبشرلقمان کہتے ہیں کہ "مجھے اس میں کوئی شک نہیں ہے ،پاکستان پردباوبڑھانے میں سب سے پہلے سعودی عرب ہے ،یروشلم پوسٹ کے مطابق مبشرلقمان نے آئی 24 کوانٹریوکے دوران کو بتایا۔ "صرف چار ممالک ہیں جو پاکستان پردباوبڑھا سکتے ہیں ، ان میں‌ ایک امریکہ ، دوسرا اسرائیل ، تیسرا ہندوستان اور چوتھا سعودی عرب۔ کوئی پانچواں ملک ایسا نہیں ہے جوپاکستان پراسرائیل کوتسلیم کرنے کے حوالے سے بارگیننگ کررہے ہیں

یروشلم پوسٹ کے مبشرلقمان کا یہ دعویٰ‌ بہت وزن رکھتا ہےکہ پاکستان اسرائیل کوتسلیم کرنے کے حوالے سے کسی کا دباوقبول نہیں کرے گا خاص کرموجودہ وزیراعظم عمران کی موجودگی میں تواس پربحث ہی فضول ہے

یروشلم پوسٹ کے مطابق مبشرلقمان نے خطے کی پیچیدہ جغرافیائی سیاسی صورتحال کے ساتھ ساتھ گذشتہ برسوں میں اس کے ارتقاء کو بھی اجمالی خاکہ پیش کیا –

جہاں ایک طرف پاکستان دباؤ کا سامنا کر رہا ہے تو دوسری طرف پاکستان کے بہت ہمدردر چین ، ایران ، ترکی اور ملائیشیا کی شکل میں موجود ہیں ،ان حالات میں پاکستان پردنیا کے دباو کی کوئی حیثیت اوراہمیت نہیں ہے

مبشرلقمان کہتے ہیں کہ پاکستان کے پاس اس وقت ایک مضبوط سیاسی قیادت عمران خان کی شکل میں موجود ہے جودباو کوکبھی خاطر میں نہیں لاتے

مبشرلقمان کہتے ہیں کہ پاکستان کواسرائیل کوتسلیم کرنے کے حوالے سے بہت زیادہ آفرز ہیں ، لیکن پاکستان اپنے نظریات پرکبھی بھی سودا نہیں کرے گا

مبشرلقمان کہتے ہیں‌ کہ ڈونلڈ ٹرمپ کے دورحکومت کے تیسرے سال پاکستان پراسرائیل کوتسلیم کرنے کے حوالےسے بہت زیادہ دباو تھا لیکن عمران خان نے اس کی پرواہ نہیں‌کی

مبشرلقمان کہتے ہیں کہ وزیراعظم کا یہ کہنا کہ ان پراسرائیل کوتسلیم کرنے کے حوالے سے دباو ہے تو وہ صرف صرف سعودی عرب کا ہے ،سعودی عرب پاکستان کی معاشی صورت حال کوکارڈ کے طورپراستعمال کرنے کی کوشش کی جسے عمران خان نے مسترد کردیا

مبشرلقمان کہتے ہیں کہ امریکہ کے نئے منتخب ہونے والے صدرجوبائیڈن بھی اسرائیل کوتسلیم کرنے کے حوالے سے پاکستان پردباو بڑھائین گے لیکن یہ بات طئے ہے کہ عمران خان اپنے نظریات اورپاکستانی موقف پرکبھی بھی سودا نہیں کریں گے,امریکی نومنتخب صدرجوبائیڈن افغانستان ، کشمیر ، ایران اورخطے کے دوسرے اہم مسائل کے حوالے سے بھی ایک الگ موقف رکھتے ہیں ،

 

 

یہی وجہ ہے کہ پاکستان نے سعودی عرب کے دباو سے نکلنے کے لیے سعودی عرب کی طرف سے دی گئی امداد واپس کرنے کا فیصلہ کیا ہے اورپاکستان بہت جلد یہ 2 ارب ڈالرز سعودی عرب کوواپس کرکے سعودی عرب کے دباو کو دورپھینک مارے گا

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.