ایل ڈبلیو ایم سی شہر میں بہترین صفائی انتظامات کو یقینی بنانے کے لیے کوشاں

شہر میں صفائی کے غیر تسلی بخش انتظامات پر جی ایم آپریشن معطل کر دیا گیا۔ یہ کمپنی کسی صورت بکیے جواری شرط باز نہیں چلائیں گے -چئیر مین ایل ڈبلیو ایم سی ملک امجد علی نون
وزیر اعلی پنجاب کے ویژن کے مطابق ایل ڈبلیو ایم سی شہر میں بہترین صفائی انتظامات کو یقینی بنانے کے لیے کوشاں ہے۔ ادارے کی جانب سے تمام وسائل کو بروئے کار لاتے ہوئے شہر میں تین شفٹس میں صفائی آپریشن جاری ہے۔ان خیالات کا اظہار چئیر مین ایل ڈبلیو ایم سی نے میڈیا کو بیان دیتے ہوئے کیا۔ مزید براں وزیر اعلی پنجاب کو شہر میں صفائی کے موجودہ حالات اور ادارے کے انتظامی معاملات سے آگاہ کر نے کے لیے گزشتہ دو تین روز سے ملنے کی کوشش کر رہا ہوں مگر ان کے دفتر کا عملہ ان سے ملاقات نہیں ہونے دے رہا۔ اس ملاقات کامقصدوزیر اعلی پنجاب کو سی ایم سیکٹریٹ کے پرنسپل سیکٹری کی جانب سے 15فروری کو موصول ہونے والے خط پر تخفظات کا اظہار اور سی ایم سیکٹریٹ کا ایل ڈبلیو ایم سی صفائی مہم کی نگرانی کے لیے صوبائی وزیر برائے صنعت و تجارت میاں اسلم اقبال کو مختص کرنے کے حوالے سے بریفنگ دینا تھا کہ یہ کمپنی کسی صورت بکیے/جواری/شرط باز نہیں چلائیں گے۔اس خط میں سی ایم سیکٹریٹ کے پرنسپل سیکٹری نے صفائی کے حوالے سے نا پسندیدگی کا اظہار کیا ہے جبکہ سچائی اسکے بر عکس ہے۔ چئیر مین ایل ڈبلیو ایم سی کے مطابق اصولی طور پر یہ خط صوبائی وزیر برائے صنعت و تجارت میاں اسلم اقبال کو دیا جانا چاہیے تھاجو کمپنی کے انتظامی امور میں مداخلت کر رہے ہیں اور ناجائز طور پر قابض ہیں۔
چئیر مین ایل ڈبلیو ایم سی کا کہنا تھا کہ وزیر اعظم پاکستان کے ویژن کے مطابق نہ صرف ایل ڈبلیو ایم سی میں موجود ہ کرپشن مافیا کو للکارااور نکالا بلکہ آئندہ کے لیے تیار ہونے والے مافیا کی کرپشن کو بھی جرات مندانہ فیصلہ کرتے ہوئے ناکام بنایا اور خاتمہ کیامزید براں بین الااقوامی کنٹریکٹرز کی اجارا داری کو بھی ختم کیا۔ایل ڈبلیو ایم کی جانب سے شہر کا صفائی آپریشن سنبھالنے کے بعد ریکارڈ ویسٹ کولیکشن کی گئی ہے۔ ترک کنٹریکٹر کی جانب سے روزانہ کی بنیاد پر ایک شفٹ میں شہر سے کوڑا اٹھایا جاتا تھا جبکہ ایل ڈبلیو ایم سی نے ذمہ داری سنبھالتے ہی ہنگامی بنیادوں پر تمام وسائل کو بروئے کار لاتے ہوئے تین شفٹس میں کام کرنا شروع کیااور ترک کنٹریکٹر کے مقابلے میں ایل ڈبلیو ایم سی کے عملے نے بہتر کارکردگی کا مظاہرہ کیا اور روزانہ کے آپریشن کے ساتھ 50ہزار ٹن سے زائد کوڑے کے بیک لاگ کو بھی کلئیر کیا۔
چئیر مین ایل ڈبلیو ایم سی کا مزید کہنا تھا کہ اس سے قبل وزیر اعلی پنجاب کے دورے اور دیگر وی آئی پی روٹس پر صفائی کے غیر تسلی بحش انتظامات پر 9سے زائد افسران معطل کیے جا چکے ہیں۔وزیر اعلی سیکٹریٹ کی جا نب سے موصول ہونے والے خط میں کسی بھی مخصوص علاقے کی نشاندہی نہیں کی گئی جسکی وجہ سے اس خط کا نوٹس لیتے ہوئے جی ایم آپریشن کو معطل کر دیا گیا ہے جو اس سے قبل میٹرو پولیٹن کارپوریشن میں بطور اسسٹنٹ ڈائریکٹر ایڈمن کے طور پر کام کر رہا تھا۔ اس کو غیر قانونی طور پر 13جنوری 2021کو ایل ڈبلیو ایم سی میں بطور جی ایم آپریشن تعینات کیا گیا جو کہ میٹرک پاس تھا۔اس غیر قانونی تعیناتی پر بورڈآف ڈائریکٹرز کے 109ویں اجلاس میں تفتیش کی گئی اور ان احکامات کو واپس کرنے کا حکم دیا گیا۔ چئیر مین ایل ڈبلیو ایم سی نے ا س عزم کا اظہار کیا کہ تمام امور قانون کے مطابق حل کیے جائینگے اور مجھ سمیت کوئی بھی قانون سے بالا تر نہیں ہے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.