fbpx

ماں.! تحریر: کاشف علی

اللہ تعالی نے ہمیں بے شمار اور بیش بہا نعمتوں سے نوازا ہے ان نعمتوں میں اللہ نے ماں جیسی عظیم الشان نعمت بھی عطا کی ہے جو کسی تحفے سے کم نہیں ہے۔
ماں کی محبت کو اللہ تعالی نے تشبیہ دے دی ہے دنیا میں محبت کی مثال میں لوگ ماں کا نام لے مثال دیتی ہے ماں کی محبت وہ بے لوث محبت ہے جس نے پتھر جیسے اولاد کو موم کیطرح ملائم بنایا
زمانے بھر کے مشقتیں اٹھا کر ماں اپنی آنکھوں میں اولاد کی کامیابی کے خواب سجائے رکھتے ہیں بچہ چھوٹا ہو تو ماں اسکی پرورش میں ذرا برابر کمی کوتاہی نہ کرتے ہوئے انکے جوانی کی دن آب و تاب سے دیکھتے ہیں جب اولاد پر جوانی پروان چڑھتی ہے تو ماں کا ایک ہی خواب ایک سپنا ایک ہی تمنا ہوتی ہے کہ میرا بچہ کامیابی کی سیڑھیوں کو بنا مشقت کے عبور کریں۔ ماں ہی وہ عظیم ہستی ہے جب بچہ گھر سے نکلے تو واپسی تک وہ گھر کے ایک کھونے میں بیٹھ کر اسکی سلامتی کیلئے کوٹ کوٹ کر روتی ہوئے دعائیں مانگتی ہے اور لبوں پر ایک ہی جملہ جس سے ماں کی محبت کا اندازہ لگایا جا سکتا ہے
تم اپنی حفاظت کیا کرو گے میرے بیٹے
بے شک سانسیں تو تمھاری ہے لیکن تم جان تو میری ہو ماں جیسی ہستی دنیا میں ہے کہاں

ماں چاہے جس کی بھی ہو یہ لفظ لب پہ آتے ہیں عزت و تکریم کے آثار دل میں منڈلانے لگتے ہیں کیوں کہ ایک ماں ہی تو ہے جس نے سہارا دے کر ہمیں پالا بڑا کیا بولنا سیکھایا ہمیں اپنی انگلی پکڑوا کر چلنا سیکھایا ایسی عظیم ہستی کا نعم البدل کہاں

ماں کی دعائیں پتھروں میں راستے بنا دیتے ہیں اگر ماں نے کہا کہ بیٹا اللہ آپ کو کامیاب کریں سمجھو آپ کامیابی کی پہلی سیڑھی پر قدم رکھ گئے ہو انکی دعائیں بلاوں مصیبتوں سے یوں محفوظ رکھتی ہے کہ بھلا یہ گمان ہی پیدا نہیں ہوتا ماں کی محبت دیکھنا ہو تو بارش میں ایک مرغی کو دیکھیں جو اپنی پرواہ کیے بغیر موسم کی شدت سے لڑتے ہوئے اپنی پروں کو کھول کر اپنی ہی بچوں پر سائبان بن جاتے ہیں انہیں اپنی زندگی کا خیال ہی نہیں ہوتا بس خیال اولاد کی زندگی کا ہوتا ہے
لاکھ گرد اپنی حفاظت کی لکیریں کھینچو
ایک بھی ان میں نہیں ماں کی محبت جیسی دنیا میں ہر چیز کا ثانی ہونا ممکن ہے لیکن ماں کی محبت کا ثانی ممکن نہیں ہے تمام محبتیں جعلی جھوٹے ہوسکتے ہیں لیکن ماں کی محبت وہ خالص محبت ہے جسکی کوئی ثانی نہیں ہوسکتی دوسری عورتوں سے کہا جاسکتا ہے کہ ماں جیسی ہو لیکن ماں سے کوئی یہ نہیں کہہ سکتا کہ فلاں عورت تم جیسی ہیں کیوں کہ ماں تو بس ماں ہے

بقول شاعر خدا کی جنت دنیا میں کبھی دیکھنے کا شوق ہو تو فقط ایک بار اپنی ماں کی گود میں کبھی سو کر دیکھنا

جن کی مائیں حیات ہیں اللہ تعالیٰ انہیں لمبی زندگی عطاء فرمائے اور جن کی مائیں وفات پا گئی ہیں اللہ تعالیٰ انہیں صبر دے ۔۔۔ آمین

@DirojayKhan1