fbpx

مفرور ملزمان کا ریکارڈ اپ ڈیٹ نہ کرنے اور گڑ بڑ کرنے پر عدالت نے جاوید بروہی کو پانچ دن کی سزا سنادی

جوڈیشل مجسٹریٹ شرقی جاوید علی کوریجو
مفرور ملزمان کا ریکارڈ اپ ڈیٹ نہ کرنے اور گڑ بڑ کرنے کا معاملہ عدالت نے ایس ایچ او انسپکٹر جاوید بروہی کو پانچ دن کی سزا سنادی عدالت نے ایس ایچ او کو گرفتار کرکہ جیل بھیجنے کا حکم دے دیا ملزم کو عدالتی فیصلے کی کاپی مفت میں فراہم کی جائے عدالت کوئی بھی قانون سے بالاتر نہیں ہے ہر ایک کو قانون کے مطابق چلنا ہے ، ایس ایچ او پر بھاری ذمہ داری ہوتی کیونکہ لوگ وہاں اپنی شکایت لے کر آتے ہیں، ایس ایچ او کی ذمہ داری ہے کہ تمام شکایت کو قانون کے مطابق دیکھے،دیکھنے میں آیا کہ کیس پراپرٹی کا رجسٹرڈ اپ ڈیٹ نہیں کیا جاتا پھر وہی کیس پراپرٹی دوسرے مقدمات میں بھی پیش کی جاتی ہے،ایس ایچ او نے عدالت نے سامنے سفید جھوٹ بولا،ایس ایچ او جمشید کوارٹر عدالت کے ساتھ مذاق کررہے ہیں ،ایس ایچ او جمشید کوارٹر جاوید بروہی کسی رعایت کا مستحق نہیں ہے ،
کیس پراپرٹیز کا رجسٹرڈ اور مفرور ملزمان کا رجسٹر اپ ڈیٹ نہیں کیا تھا ، پولیس رولز کے تحت تمام ریکارڈ اپ ڈیٹ کرنا ایس ایچ او کی ذمہ داری ہے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.