اسرائیل کی طرف سےمغربی کنارے کو اپنا حصہ بنانے پر عر ب لیگ اور ترکی کی شدید مزمت

اسرائیل کی طرف سے مغربی کنارے کو اپنا حصہ بنانے پر عر ب لیگ اور ترکی کی شدید مزمت

باغی ٹی وی: اردن کے مقبوضہ مغربی کنارے کو اپنا حصہ بنانے پر اسرائیل پر شدید تنقید جاری ہے .عرب لیگ اور ترکی نے اسرائیل کے وزیر اعظم نیتن یاہو کی جانب سے مغربی کنارے کی وادی اردن میں یہودی بستیاں بنانے کے اعلان کی مذمت کرتے ہوئے بیان کو نسل پرستانہ قرار دے دیا۔

ترکی وزیر خارجہ چاوش اولو نے ٹویٹر پر اپنے پیغام میں کہا کہ انتخابات سے قبل اس قسم کے اوچھے ہتھکنڈوں اور جارحانہ پیغامات صیہونی ریاست کو نسل پرستی کی جانب لے جا رہے ہیں لیکن فلسطینی بردار عوام مطمئن رہیں حکومت ترکی ان کے حقوق اور جائز مفادات کا تحفظ کرتی رہے گی ۔

صہیونی ظلم جاری غزہ پر اسرائیل کے 15 فضائی حملے


واضح رہے کہ اسرائیلی وزیر اعظم اس بات کا اعادہ کر چکے ہیں وہ انتخابات میں دوبارہ منتخب ہونے کی صورت میں مقبوضہ علاقے مغربی کنارے غور اردن کو اسرائیل کا حصہ بنائیں گے، مقبوضہ علاقوں میں اس وقت غیر قانونی یہودی بستیوں کی تعداد 250 کے قریب ہے جن میں 4 لاکھ یہودی آباد ہیں۔

مقبوضہ مغربی کنارے کو اسرائیل کا حصہ قرار دیے جانے پر سعودی عرب نے شدید مزمت کر دی

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.