fbpx

مہاراشٹرا وزیر کے خلاف جنسی ہراسانی کا مقدمہ درج کرانے والی گلوکارہ خود پھنس گئی

بھارتی جنتا پارٹی(بی جے پی) کے رہنما کرشنا ہیگڑے اور دیگر نے بھارتی گلوکارہ رینو شرما کے خلاف بلیک میل کرنے اور جال میں پھنسانے کی درخواست دے دی۔

باغی ٹی وی : بھارتی میڈیا رپورٹس کے مطابق گزشتہ دنوں گلوکارہ رینو شرما نے بھارتی ریاست مہاراشٹرا کے وزیر دھننجے منڈے پرزیادتی کا الزام لگایا تھا۔

رینو شرما نے الزام لگایا تھا کہ شادی کے اصرار پر ریاستی وزیر نے انڈسٹری میں لانچ کرنے کے بہانے بنائے اور زیادتی کا نشانہ بناتے رہے۔

رپورٹس کے مطابق گلوکارہ کے الزامات کے بعد پولیس نے تحقیقات شروع کردی ہیں تاہم گلوکارہ اب خود پھنس گئی ہیں۔

گلوکارہ کے خلاف بی جے پی کے رہنما کرشنا ہیگڑے اور مقامی جماعت کے رہنما نے بلیک میل کرکے رقم اینٹھنے کا الزام عائد کیا ہے۔

بی جے پی رہنما کی جانب سے ممبئی کے علاقے اندھیری ویسٹ کے پولیس تھانے میں درخواست جمع کرائی گئی ہے جس میں کہا گیا ہے کہ رینو شرما نے جال میں پھنسا کر بلیک میل کرنے اور رقم لینے کوشش کرچکی ہے۔

ان الزامات کی گلوکارہ نے تردید کی اور اپنے خلاف سازش قرار دیا اور کہا کہ مجھے مقدمے سے پیچھے ہٹانے اور گرانے کیلئے اتنے لوگوں کو سامنے آنا پڑ رہا ہے۔

دوسری جانب پولیس تحقیقات میں انکشاف ہوا ہے کہ گلوکارہ نے 2019 میں بھی ایک شہری رضوان کے خلاف اسی قسم کا مقدمہ دائر کیا تھا جس کے بعد پولیس نے بھی ریاستی وزیر کے خلاف فوری کارروائی سے گریز کیا ہے۔

خیال رہے کہ گلوکارہ رینو شرما متعدد گانے گاچکی ہیں جس میں ’بے شرم‘ اور ’دیسی لو‘ شامل ہیں۔

بھارتی ریاست مہاراشٹرا کے وزیر کی بھارتی گلوکارہ سے مبینہ زیادتی، مقدمہ درج

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.