fbpx

‏مذہب اور انسانیت تحریر: سجاول سلیم

انسان سے محبت اور احترام ہمیں ہمارا مذہب سیکھتا ہے
اللہ تعالی نے انسان کو ایک جیسی اصلاحیتوں سے نوازا ہے انسان کی پیدائش سے لے کر موت تک ساری ہدایت مذہب کرتا ہے ماں باپ بہن بھائی رشتےدار برادری ان سب کی پہچان مذہب کرواتا ہے
دنیا کا کوئی مذہب برے کام کو اچھا کام نہیں بتاتا۔

اسلام نے غیر مسلموں کے ساتھ عزت و احترام کے ساتھ پیش آنے کا حکم دیا اور ان کے ساتھ کسی بھی قسم کی ظلم و زیادتی نہیں کی جائے انسانی حقوق سب سے اہم پہلو مذہب ہوتا ہے
انسانی کے اخلاق کا معاشرتی زندگی پر بہت اثر پڑتا ہے۔
آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم رحمتہ اللعالمین بنا کر بھیجا تاکہ دنیا میں علم کا نور پھیلایا جائے۔ انسانیت کے ذریعے انسانوں کی عزت کی جائے۔ اللہ کے رسول صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم غار حرا سے اللہ کے اس حکم کے ساتھ اترے کہ نبوت کا اعلان کر کے اللہ کے پیغام کو ساری انسانیت میں عام کر دیں۔

آپ نے یہ بات زور دے کر کہی کہ اسلام انسانیت کے خلاف جنگ کی اجازت نہیں دیتا۔ آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے انسانیت کے احترام کا بیڑہ اٹھایا، آپ بیواؤں، غریبوں یتیموں، پڑوسیوں کے غمگسار ہیں۔ اس اصول کو آپ نے ساری انسانیت کے سامنے پیش کیا۔
انسانیت اور اچھا اخلاق انسان کو ہمیشہ اونچے مرتبے پر فائز رکھتا ہے۔
وہی انسان سب سے اچھا ہے جس کا اخلاق اچھا ہے۔ انسان کو اتحاد اور محبت کے ساتھ زندگی بسر کرنی چاہیے. انسانیت کی خدمت کا جو دائرہ دین اسلام نے دیا ہے وہ کسی بھی مذہب نے نہیں دیا۔
قرآن مجید میں ایک انسان کے قتل کو پوری انسانیت کا قتل قرار دیا گیا اور ایک انسان کی جان کو بچانا پوری انسانیت کی جان کو بچانے کے برابر قرار دیا گیا ہے۔
مذہب امن کا ضامن ہے کیونکہ مذہب اخوت، اتحاد ، محبت اور مساوات کو جنم دیتا ہے۔ اور نفرت ، عداوت کو بالکل ختم کرتا ہے۔ ایک دوسرے کے کام انا انسانیت ہے۔ ہمارے معاشرے سے انسانیت مر چکی ہے
غریبوں اور مظلوموں پر ہم ظلم کرتے ہیں حالات سے مجبور لوگوں کی مجبوری کا فائدہ اٹھایا جاتا ہے لیکن ہمارا مذہب اس چیز کی اجازت بالکل بھی نہیں دیتا کہ کسی مجبور شخص کی مجبوری سے فائدہ اٹھایا جائے۔

آپ صلی اﷲ علیہ وآلہ وسلم نے اپنے بے مثال خطبہ حجۃ الوداع میں اس حقیقت کاا ظہاربایں الفاظ فرمایا:’’ اے لوگو ! کسی گورے کو کالے پر اور کسی کالے کو گورے پر کسی عربی کو عجمی پر اور عجمی کو عربی پر کوئی فضیلت نہیں سوائے تقویٰ کے ،تم سب آدم علیہ السلام کی اولاد ہو اور آدم علیہ السلام کو مٹی سے پیدا کیا گیا۔‘‘

@Sajawal_13