مقبوضہ کشمیر، محرم کے جلوسوں پر پابندی عائد کر دی گئی

مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوج نے محرم الحرام کے جلوسوں کو روکنے کے لیے کرفیو اور دیگر پابندیوں کو مزید سخت کردیا ہے۔
مقبوضہ کشمیر کرفیو کا 37واں دن ، ایمبولینسوں اور طبی عملے کو بھی روک لیا گیا
سرینگر، بادگام اور مقبوضہ علاقے کے دیگر علاقوں میں کسی کو بھی باہر جانے کی اجازت نہیں ہے۔ یہاں تک کہ صحافیوں اور سرکاری ملازمین جن کے پاس کرفیو کے سرکاری کارڈ ہیں، گھروں سے باہر آنے کی اجازت نہیں ہے۔

سری نگر شہر اور اس سے ملحقہ علاقوں کو تاروں سے مکمل طور پر سیل کردیا گیا ہے۔ تمام بازار بند ہیں جبکہ آمدورفت سڑک سے دور ہے۔ وادی کشمیر میں انٹرنیٹ اور موبائل فون کی کوئی خدمت موجود نہیں ہے ، جو مواصلات کی بندش کی وجہ سے 5 اگست سے باقی دنیا سے منقطع ہے ، جبکہ ٹی وی چینلز بھی بند ہیں۔

کرفیو اور پابندیوں کی وجہ سے ادویات سمیت ضروری اشیا کی شدید قلت پیدا ہوگئی ہے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.