کرونا نے زندگی کے ضابطے بدل دیئے ،کہیں طلاقیں ،کہیں دو دو شادیاں تو کہیں طلاق کے 31 سال بعد دوبارہ شادی

ڈنمارک: کرونا نے زندگی کے ضابطے بدل دیئے ،کہیں طلاقیں ،کہیں دو دو شادیاں تو کہیں طلاق کے 31 سال بعد دوبارہ شادی ،اطلاعات کےمطابق دنیا بھر میں کورونا وبا کے تناظر میں دلچسپ واقعات رونما ہورہے ہیں اور اب امریکا میں ایک جوڑے نے طلاق کے 31 سال بعد دوبارہ اسی تاریخ کو شادی کرلی جس تاریخ کو پہلی بار شادی کے بندھن میں بندھے تھے۔

اس وقت خاتون لوٹ اور مرد کیلڈ کی عمر بالترتیب 75 اور 82 برس ہے۔ انہوں نے تین اپریل 1965 کو ڈنمارک کے نکولائی چرچ میں شادی کی تھی اور اب 55 سال بعد عین اسی تاریخ کو دوبارہ رشتہ ازدواج میں منسلک ہوئے ہیں۔

پہلی شادی کے وقت خاتون کی عمر 20 اور مرد کی عمر 27 برس تھی لیکن 1989 میں یہ شادی طلاق کے بعد ختم ہوگئی تھی۔ پیشے کے لحاظ سے دونوں ہی مصور ہیں اور شادی کے بعد ان کے گھر میں چار بچوں نے جنم لیا۔ لیکن پھر تلخیاں بڑھیں اور دونوں کے درمیان طلاق ہوگئی۔

ان کے درمیان طلاق کی اہم وجہ گھریلو پریشانیاں تھیں۔ سب سے پہلے کیلڈ کینسر کے شکار ہوئے اور اسپتال میں تھے جبکہ خاتون گھر میں بچوں کو دیکھ رہی تھی اور وہ ٹھیک ہوگئے۔ اس کے بعد ان کے گھر کو آگ لگ گئی اوربہت نقصان ہوا۔ اس کے بعد دونوں میاں بیوی نے اپنے اپنے راستے جدا کرلیے۔ لیکن دو سال بعد ان کے درمیان دوبارہ رابطہ شروع ہوگیا۔

2009 کے بعد لوٹ کا اپنڈکس پھٹ گیا جس سے بمشکل ان کی جان بچائی گئی لیکن وہ مستقل وہیل چیئر کی محتاج ہوگئیں۔ اس کے بعد کورونا وبا کے بعد دونوں کو یہ احساس ہوا کہ زندگی میں کسی بھی وقت مشکل پیش آسکتی ہے اور یوں اس ماہ دونوں نے 55 سال پہلے کی شادی اور 31 سال پہلے کی طلاق کے بعد دوبارہ شادی کرلی۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.