زیادتی کے بعد قتل ہونے والی 5 سالہ مروہ کے والدین کو پروگرام میں مدعو کرنے پر صارفین ندا یاسر پر برہم

سوشل میڈیا صارفنی نے نجی ٹی وی کے مارننگ شو کی میزبان اداکارہ ندا یاسرکو کراچی میں زیادتی کے بعد قتل ہونے والی 5 سالہ مروہ کے والدین کو پروگرام میں مدعو کرنے پر شدید تنقید کا نشانہ بنایا-

باغی ٹی وی : حال ہی میں نجی ٹی وی کے مارننگ شو کی میزبان اداکارہ ندا یاسر نے کراچی میں زیادتی کے بعد قتل ہونے والی 5 سالہ مروہ کے والدین کو پروگرام میں مدعو کرکے افسوسناک واقعے سے متعلق متعدد سوالات کیے جس پر سوشل میڈیا صارفین نے اظہار برہمی کرتے ہوئے پیمرا سے شو بند کرانے کا مطالبہ کردیا۔

کراچی کے علاقے عیسٰی نگری میں 5 سالہ مروہ کو دو ملزمان نے زیادتی کا نشانہ بنایا اور لاش کچرا کنڈی میں پھینک دی تھی۔ اس دل سوز واقعے پر ہر دل دکھ سے بھرا ہوا ہے۔ ایسے میں ندا یاسر نے اپنے مارننگ شو میں مروہ کے والدین کو بلایا اور واقعے سے متعلق متعدد سوالات پوچھے۔

ندا یاسر نے اپنے پروگرام میں معروف سماجی کارکن صارم برنی اور ایک قانون دان کو بلایا۔ پروگرام کے دوران ندا یاسر نے واقعے سے متعلق والدین سے سوالات کئے جس پر برقع میں ملبوس مروہ کی دادی زار و قطار رونے لگیں اور ایک موقع پر خود ندا یاسر بھی اپنے جذبات پر قابو نہیں رکھ سکیں۔

مارننگ شو کے ویڈیو کلپ سوشل میڈیا پر وائرل ہوئے تو صارفین ندا یاسر پر شدید غم وغصے سے پھٹ پڑے، صارفین نے کہا کہ مظلوم والدین سے پوری دنیا کے سامنے اس طرح کے سوالات ان کی دل جوئی کے بجائے انہیں مزید دکھی کرنے کا سبب بنے۔

ایک صارف نے لکھا کہ میزبان نے ایک بار پھر غمزدہ والدین کے زخموں کو ہرا کردیا۔ ایک صارف نے لکھا کہ میڈیا کو اخلاقیات سیکھنے اور ضابطہ اخلاق پر عمل کرنے کی اشد ضرورت ہے۔ چند صارفین نے پیمرا کی جانب سے اب تک پروگرام پر پابندی نہ لگانے پر تعجب کا اظہار بھی کیا۔

جبکہ چند صارفین نے ندا یاسرویڈیو کے بیک گراؤنڈ میوزک پر اعتراض کرتے ہوئے تنقید کی کچھ صارفین نے کہا کہ متاثرہ فیملی کو اس طرح شو میں بلا کر بار بار سوال کرنا ایک تکلیف دہ عمل ہے-

منیب بٹ ملکی حالات کے پیش نظر اپنی بیٹی امل کے لئے خوفزہ

ماہرہ خان کامن ویلتھ کی ٹیم کے ساتھ خواتین اور بچوں کے ساتھ ہونے والے جنسی ہراسانی…

مروہ قتل کیس:شوبز فنکاروں کا ملک میں مجرموں کو سرعام پھانسی دینے کے قانون کا…

جنسی زیادتی میں ملوث افراد کو سرعام پھانسی دینی چاہئیے تاکہ انہیں دوسروں کے لیے مثال بنایا جاسکے اقرا عزیز

5 سالہ بچی کے قاتلوں کے لئے صرف پھانسی کی سزا کافی نہیں اُشنا شاہ

اکیلی عورت ذمہ داری ہوتی ہے موقع نہیں مایا علی

میں ایسا ملک چاہتی ہوں جس میں ہر عقیدے اور ہر صنف کا احترام کیا جائے اور ہر ایک کو…

ملک میں بڑھتے زیادتی کے واقعات کے پیش نظر یاسر حسین کی پڑھی گئی نظم مملکت خداداد…

میں پھانسی کے خلاف نہیں ہوں مگر پھانسی اصل مجرم کو ہونی چاہیے نہ کہ کسی کو بھی…

بشری انصاری کا مولانا طارق جمیل سے جنسی زیادتی کے بڑھتے واقعات کے خلاف احتجاج کرنے…

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.