fbpx

مسجد نبوی ﷺ میں گذشتہ 100 سالہ تاریخ کا افسوس ناک واقعہ پیش آیا جس پر ہم سب شرمندہ ہیں،حافظ طاہر محمود اشرفی

پاکستان علماء کونسل کے سربراہ علامہ حافظ طاہر محمود اشرفی نےکہا ہےکہ گذشتہ دنوں مسجد نبوی ﷺ کی تقدس پامالی پر ہم سب شرمندہ ہیں۔

باغی ٹی وی : اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے حافظ طاہر محمود اشرفی کا کہنا تھا کہ خانہ کعبہ کے بعد مسلمانوں کے مقدس ترین مقام مسجد نبوی ﷺ میں گذشتہ 100 سالہ تاریخ کا افسوس ناک واقعہ پیش آیا جسے بیان نہیں کیا جاسکتا ہے۔

خان صاحب،گفتگو کرتے وقت پڑھ لیا کریں،طاہر اشرفی کی تنقید کہا ہم آپکے غلام نہیں

حافظ طاہر محمود اشرفی کا کہنا تھا کہ میں واقعے کا عینی شاہد ہوں، اس وقت میں وہاں موجود تھا، جہاں درود شریف بھی آہستہ پڑھنے کا حکم ہے وہاں منصوبہ بندی کے تحت مسجد کے مختلف حصوں میں ٹولیاں کھڑی گئیں اور گنبد خضریٰ کے سائے تلے بھی یہ ٹولے کھڑے تھے اور جب وزیراعظم کا وفد افطار سے کچھ دیر قبل نکلا تو ہوٹل سے لے کر گنبد خضریٰ تک ایک ہی غلیظ نعرہ لگایا گیا جس سے ظاہر ہے کہ یہ منصوبہ بندی کے تحت کیا گیا، یہاں تک کہ اذان مغرب کے وقت بھی غلیظ نعرے لگائے گئے۔

حافظ طاہر محمود اشرفی کا کہنا تھا کہ مریم اورنگزیب کے ساتھ روا رکھا گیا سلوک بھی قابل مذمت ہے، واقعے نے بطور پاکستانی ہمارے سر شرم سے جھکا دیئے ہیں، مسجد نبوی ﷺ کے تقدس کو پامال کیا گیا جس سے عالم اسلام میں پاکستان کی بدنامی ہوئی۔

مسجد نبوی میں نازیبا نعرے، مولانا طارق جمیل بھی خاموش نہ رہ سکے

ان کا کہنا تھا کہ سابق وزرا اور تحریک انصاف کےکارکنوں کی جانب سے اس واقعےکی حوصلہ افزائی کی گئی، یہ سب پاکستان کے نام پہ کیا گیا، میں سمجھتا تھا کہ عمران خان جنہیں میں عاشق رسول ﷺ سمجھتا ہوں وہ اس کی مذمت کریں گے لیکن ان کے بیانات سے مجھے تکلیف ہوئی ہے۔

انہوں نےکہا کہ ملوث افراد کو سعودی حکومت نے گرفتار کیا ہے، وزیراعظم نے سعودی حکام سے درخواست کی ہےکہ کسی بےگناہ کو نہ پکڑا جائے لیکن ملوث افراد کو سعودی قانون کے تحت سزا ملےگی۔