مسجد میں گانے کے شوٹ کی اجازت کے تیس ہزار روپے لیے گئے ، نوٹیفیکیشن سامنے آ گیا

گلوکار بلال سعید کے نئے گانے قبول ہے کی مسجد وزیر خان کی شوٹنگ کے عوض 30000 روپے لئے گئے ہیں-

باغی ٹی وی: گلوکار بلال سعید اور اداکارہ صبا قمر کے نئے گانے قبول ہے کی شوٹنگ مسجد وزیر خان میں کرنے پر عوام سمیت معروف شخصیات نے دونوں فنکاروں اور مسجد کی انتظامیہ پر غم و غصے اظہار کرتے ہوئے اس واقعے کی تفتیش کرنے کا مطالبہ کیا ہے جس کے نتیجے میں چند انکشافات سامنے ہیں –

مسجد کی اجازت زونل ایڈمنسٹریٹر اوقاف لاہور زون کی طرف سے اجازت برائے ریکارڈنگ جامع مسجد وزیر خان لاہور کے عنوان سے جاری کیا گیا تھا جس میں درج تھا کہ مسجد میں 30000 روپے فیس کے عوض احمد وقاص لائن پروڈیوسر آفس نمبر 14 تھرڈ فلور شبیر تاؤن عبدالستار ایدھی روڈ لاہور کو مورخہ 28 جوکائی 2020 ک2 شوٹنگ کی اجازت دی گئی تھی-مسجد میں شوٹنگ کی کچھ شرائط بھی پیش کی گئیں تھیں-

جن میں ایک شرط یہ بھی تھی کہ ریکارڈنگ کے دوران مسجد کے تقدس کو پیش نظر رکھا جائے اور ہر اس عمل سے اجتناب کیا جائے جس سے ان کی حرمت پر حرف آتا ہو اور مذہبی معاملات میں بھی خلاف شریعت یا کوئی ایسا عمل نہ ہو جس سے کسی بھی پاکستانی کی دل آزاری ہو –

ریکارڈنگ کے دوران کسی بھی قسم کا میوزک نہیں بجایا جائے گا ریکارڈنگ کے دوران لباس حرکار و سکنات میں دینی اور شرعی تشخص کو ہمہ وقت پیش نظر رکھا جائے گا-

نوٹیفیکیشن میں یہ بھی درج تھا کہ درج بالا تمام شرائط کی خلاف ورزی کی صروت میں انتظامیہ کو اختیار ہو گا کہ وہ ریکارڈنگ کو بند کروائے-

واضح رہے کہ صبا قمر گلوکار بلال سعید کے نئے آنے والے گانے قبول ہے کی شوٹنگ میں مصروف ہیں جس کا ایک سین مسجد وزیر خان میں بھی لیا گیا جس پر مذہبی معروف شکصیات سمیت لوگ بھی شدید غم و غصے کا اظہار کرتے ہوئے ان کی گرفتاری اور کاروائی کا مطالبہ کر رہے ہیں

مسجد میں گانے کی شوٹنگ پر صبا قمر اور بلال سعید کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی، سیکرٹری اوقاف پنجاب

صبا قمر کی مسجد وزیرخان میں ڈانس کی ویڈیو وائرل

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.