fbpx

ماسک سمگلنگ کے الزامات، ڈاکٹر ظفر مرزا خود میدان میں آ گئے ،بڑا اعلان کر دیا

ماسک سمگلنگ کے الزامات، ڈاکٹر ظفر مرزا خود میدان میں آ گئے ،بڑا اعلان کر دیا

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق وزیراعظم عمران خان کے معاون خصوصی برائے قومی صحت ڈاکٹر ظفر مرزا نے ماسک سمگلنگ کے الزامات کی تردید کرتے ہوئے کہا کہ غلط اور حقائق کے منافی خبر نشر اور شائع کرنے والوں کے قانونی نوٹسز بھجواﺅں گا ۔

قومی سلامتی کمیٹی کے اجلاس کے بعد جمعہ کی رات میڈیا بریفنگ کے دوران ایک سوال کے جواب میں معاون خصوصی ڈاکٹر ظفر مرزا نے کہا کہ میرے خلاف ماسک سمگلنگ کی کوئی انکوائری نہیں ہورہی ، یہ خبر بلکل حقائق کے منافی ہیں ، اپنے قانونی مشیران سے مشاورت کر رہا ہوں جو بھی اس میں شامل ہوگا اس کے خلاف لیگل نوٹسز بھجواﺅں گا.

واضح رہے کہ سندھ حکومت نے فیس ماسک بیرون ملک اسمگل کرنے پر وزیراعظم عمران خان کے معاون خصوصی برائے صحت ظفر مرزا کے استعفی کامطالبہ کردیا.

سندھ کے صوبائی وزیر زراعت اسماعیل راہو کا کہنا تھا کہ ماسک چوربھی وہی نکلے جو چینی چوراور آٹا چور تھے،ایسے معاملات میں نام نہاد نیب اندھی ہوجاتی ہے,نیب حکومت مخالف سیاستدانوں اور آزاد میڈیا کو دبانے میں مصروف ہے. بنی گالا میں بیٹھے چوروں کیخلاف کوئی ایکشن نہیں لے رہا.

واضح رہے کہ قومی تحقیقاتی ادارے ایف آئی اے نے وزیراعظم عمران خان کے معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر ظفر مرزا کے خلاف 2 کروڑ فیس ماسک مبینہ طور پر بیرون ملک اسمگل کرانے کے الزام میں انکوائری شروع کردی ہے۔ معاون خصوصی صحت ڈاکٹر ظفر مرزا پر20 ملین فیس ماسک بیرون ملک اسمگل کرانے کا الزام عائد کیا گیا ہے۔

 

ماسک چور بھی وہی نکلے جو چینی و آٹا چور تھے، پیپلز پارٹی،ن لیگ کا ظفر مرزا کے استعفیٰ کا مطالبہ