fbpx

محض 24 گھنٹوں میں یورپ میں سردی کی شدید لہر

محکمہ موسمیات نے پیش گوئی کی تھی کہ برطانیہ میں ابھی سردی کا موسم جاری رہنے کا امکان ہے جبکہ ایسٹر کے موقع پر بھی برفانی ہوائوں اور مختلف علاقوں میں برفباری کی پیش گوئی کی گئی تھی تاہم آرکٹک ہوائوں نے راتوں رات برطانیہ میں داخل ہوئیں اور شدید برف باری ہوئی، شدید برفانی طوفان کی وجہ سے درجہ حرارت نقطہ انجماد سے نیچے رہا-

باغی ٹی وی : محکمہ موسمیات نے شمالی سکاٹ لینڈ کے بعض علاقوں میں برفباری کی پیشگوئی کی تھی تاہم موسم کی پیش گوئی کرنے والوں کا کہنا تھا کہ اب درجہ حرارت میں مسلسل کمی ہونے کا امکان ہے لیکن برفباری نہیں ہوگی۔ یخ بستہ موسم کے باوجود لوگوں سے کہا گیا کہ اگرچہ کوروناکی پابندیاں نرم کی جا رہی ہیں لیکن وہ گھروں سے باہر صرف اپنے دوستوں اور فیملی کے ارکان سے ملاقاتیں کریں۔

ادھر سینسبری کی ایک سروے رپورٹ میں کہا گیا تھا کہ 51 فیصد سے زیادہ برطانوی گھرانوں نے امسال ایسٹر پر باربی کیو یا پکنک کا پروگرام بنایا ہوا ہے۔تاہم فائف، اسٹریچ لائیڈ اور ہائی لینڈز میں برفانی جھکڑ چلنے اور برفباری کی وجہ سے یہ پروگرام خطرے میں پڑتے نظر آئے۔

محکمہ موسمیات کی وارننگ کے مطابق بالائی علاقوں میں 15 سینٹی میٹر تک برف گرنے کا امکان ہے۔ محکمہ موسمیات نے اتوار کو شام 6 بجے سے زرد وارننگ جاری کردی تھی۔ محکمہ موسمیات کے کریگ سنیل کا کہنا ہے کہ برطانیہ کے بیشتر علاقوں میں موسم گرما کا مزہ چکھنے کے بعد اب سردی بڑھنے کا امکان ہے، جو ایسٹر کے اختتام ہفتہ تک جاری رہنے کا امکان ہے۔

انھوں نے کہا تھا کہ اگرچہ سال کے اس حصے میں برفباری کوئی غیر معمولی بات نہیں ہے لیکن بہت سے لوگوں کو موسم کی اس تبدیلی سے دھچکہ لگ سکتا ہے۔ ہفتہ کو جنوب مشرق اور لندن میں درجہ حرارت 12 سینٹی گریڈ رہنے کا امکان ہے جبکہ پیر کو لندن میں درجہ 8 درجہ سینٹی گریڈ پر آجانے کا امکان ہے جبکہ بالائی علاقوں میں درجہ حرارت 13 اور 10 سینٹی گریڈ رہنے کا امکان ہے،

موسم کی خرابی کے باوجود برطانوی شہری گڈ فرائی ڈے کی تعلیم جوش وخروش کے ساتھ منایا اور بڑی تعداد میں لوگ پارکوں اور ساحلی علاقوں کا رخ کیا۔

میٹروپولیٹن پولس نے مجوزہ مظاہروں کے پیش نظرطویل اختتام ہفتہ کیلئے وارننگ جاری کی ہے، جس میں لوگوں سے کہا گیا ہے کہ وہ بڑی تعداد میں جمع نہ ہوں۔ پولیس نے متنبہ کیا ہے کہ قانون کی خلاف ورزی کی صورت میں جہاں ضرورت محسوس کی گئی ہے، کارروائی کی جائے گی۔

تاہم آرکٹک ہوائوں نے راتوں رات برطانیہ میں داخل ہوئیں اور شدید برف باری ہوئی، شدید برفانی طوفان کی وجہ سے درجہ حرارت منجمند ہونے کی حد تک بڑھ گیا-

سخت سردی کا موسم محض 24 گھنٹے میں آیا برطانیہ کے ساحل اور پارکوں میں لاک ڈاؤن میں نرمی کی وجہ سے عوام کی بھر مار تھی اور 18C (64.4F) کے گرم درجہ حرارت میں ایسٹرانجوائے کر رہے تھے-

پیر کی صبح درجہ حرارت بہت کم تھا کیونکہ سردی بڑھانے والی شمالی ہوائیں چل رہی تھیں۔ پارہ 1 ڈگری کے ساتھ شمال میں اور بمشکل ہی جنوب میں نقطہ انجماد کی حد تک بڑھ گیا ہے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.