مہمان اللہ کی رحمت ، جس گھر میں مہمان ہو اس گھر میں اللہ کی رحمت برستی ہے

مہمان اللہ کی رحمت ہوتے ہیں گھر میں مہمان بعد میں آتا ہے جبکہ اللہ رب العزت اسکا رزق پہلے بھیج دیتے ہیں ایک زمانہ تھا جب لوگ گھرون میں مہمان آنے کی خوشیاں منایا کرتے تھے اور یہ عالم ہوا کرتا تھا کہ اگر مہمان کسی ایک گھر میں آتاتو پورا محلہ کے سارے گھرانے ایک ایک کر کے مہمان کی تواضع کے متمنی ہوتے اور جب مہمان کسی دوسرے گھرانے کی دعوت قبول کر لیتا تو اس گھر میں خوشی کی لہر دور جاتی اور کسی مصروفیت کی وجہ سے مہمان موذرت کر لیتا تو اس گھرانے کے افراد کوئی اچھا سا پکوان خود اس کے گھر پہنچا دیا کرتے کیا اچھا زمانہ اور لوگ ہوا کرتے تھے ماضی کے لوگ اپنی وضع داری کو مقدم رکھتے تھے مہمان کی اہمیت نبی پاک
صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی اس حدیث سے واضح ہوتی ہے اللہ کے پیارے رسول صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا مہمان اپنا رزق لے کر آتا ہے اہل خانہ کے گناہ اپنے ساتھ لے کرجاتا ہے

ایک عورت آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے پاس آئی اور اپنے شوہر کی شکایت کی کہ وہ بہت زیادہ اپنے دوستوں کو گھر دعوت دیتا رہتا ہے اور وہ ان کی مہمانداری میں کھانے بنا بنا کے تھک جاتی ہے رسول پاک صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے کوئی جواب نہیں دیا وہ عورت چلی گئی کچھ دیر بعد اس عورت کے شوہرکو بلوایا اور فرمایا ،”آج میں تمہارا مہمان ہوں ” وہ آدمی بہت خوش ہوا اور جا کر اپنی بیوی کو بتایا کہ اللہ کے رسول صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم آج ہمارے مہمان ہیں ” اسک کی بیوی بے حد خوش ہو گئی اور محنت سے ہر چیز تیار کرنے میں لگ گئی اپنے معزز مہمان ہم سب کے آقا نبی کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے لئے اس پرتکلف اور زبردست دعوت کے بعد رسول صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے اس آدمی سے کہا کہ ” اپنی بیوی سے کہنا اس دروازے کو دیکھتی رہے جس میں جاؤں گا ” تو اس کی بیوی نے ایسا ہی کیا اور دیکھتی رہی اس نے دیکھا کہ کس طرح رسول صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے گھر سے نکلتے ہی آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے پیچھے بہت سے مہلک حشرات اور بچھو بھی گھر سے باہر نکل گئے وہ یہ عجیب و غریب منظر دیکھ کر بے ہوش ہو گئی جب وہ ہوش میں آنے کے بعد آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے پاس آئی تو آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا جب تمہارے گھر سے مہمان جاتا ہے تو اپنے ساتھ ہر طرح کے خطرات مشکلات اور آزمائشیں اور مہلک جاندار گھر سے باہر لے جاتا ہے اور یہ اسی وجہ سے ہوتا ہے جب تو محنت سے اس کی خاطر و مدارت کرتی ہو جس گھر میں مہمان آتے جاتے ہیں اس گھر سے اللہ محبت کرتا ہے اور ایسے گھر پر اللہ کی رحمت اور بخشیش نازل ہوتی رہتی ہیں اللہ کے رسول صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا ” جب اللہ کسی کا بھلا چاہتے ہیں تو اسے انعام سے نوازتے ہیں پوچھا گیا اے اللہ کے رسول صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کس انعام سے آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا مہمان اپنا نصیب لے کر آتا ہے اور جاتے ہوئے گھر والوں کے گناہ اپنے ساتھ لے کر جاتا ہے مہمان جنت کا راستہ ہے رسول پاک صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کا ارشاد ہے کہ جو اللہ اور روز آخرت پر ایمان رکھتا ہے وہ اپنے مہمان کے ساتھ بے لوث ہو حضرت فاطمہ رضی اللہ تعالی و عنہ نے فرمایا اگر تمہارے گھر میہں کوئی مہمان آئے اور وہ بھوکا چلا جائے تو گویا وہ کسی قبرستان میں آیا تھا حضرت موسی علیہ السلام نے اللہ سے پوچھا یے میرے مالک جب تو خوش ہوتا ہے تو کیا کام کرتا ہے اللہ نے عرض کیا “بارش برساتا ہوں” حضرت موسی نے دوبارہ عرض کیا جب تو اور زیادہ خوش ہو تو؟ اللہ پاک نے فرمایا ” تو میں بیٹیاں پیدا کرتا ہوں ” حضرت موسی نے پھر عرض کیا اے خالق و کائنات جب تو سب سے زیادہ خوش ہوتا ہے تو کیا کرتا ہے ؟ اللہ نے فرمایا پھر میں مہمان بھیجتا ہوں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.