fbpx

"مہنگائی اور عام عوام ” .تحریر: فجر علی

ہم پاکستانی قوم بھی بڑی عجیب ہیں ہمیشہ وہ چیز کو دیکھتے اور جو ہمارے سامنے چل رہی ہو جیسے کے میاں محمد نواز شریف کا دور حکومت ۔
نواز شریف وزیراعظم بنا تو صوبہ پنجاب کا ویزاعلی اپنے بھائی کو بنایا شہباز شریف نے پنجاب چونکہ پاکستان کا صوبہ پنجاب 122 تحصیلوں میں تقسیم ہے، جو 36 اضلاع کا حصہ ہیں۔
ان 36 میں سے جناب نے صرف لاہور شہر پر پیسہ لگایا اور وہ نظر آیا،ان میں بہت سے میگا پراجیکٹس کئے جن میں سرفہرست لاہور رنگ روڈ،پاکستان لیور اینڈ کڈنی ٹرانسپلاٹ، شہباز شریف ہسپتال اورینج لائن ٹرین میٹرو بس سروس، سپیڈو بس سروس وغیرہ اور ایسے اور بہت سے پراجیکٹس ابھی مکمل ہونے ہی تھے کہ ان دونوں بھائیوں کو اقتدار سے ہٹا دیا گیا ۔ الیکشن ہوئے تو جناب دونوں بھائیوں کو شکست کا سامنا کرنا پڑا تب ان دونوں بھائیوں کو غریب عوام کا درد ستانے لگا ، لیکن بات یہاں پر اس پیسے کی کرتی ہوں جو دونوں بھائیوں نے عوام کا خون نچوڑ کر کمایا ۔

شہباز شریف صاحب کو ایک کیس میں نیب نے کھنگالا تو معلوم ہوا کہ صاف پانی کے پلانٹس میں صاحب نے بہت کرپشن کی اس پر جب ان سے کسی صحافی نے عدالت کے باہر کہا کہ آپ صاف پانی کے منصوبے جگہ جگہ کیوں نہیں لگاتے جیسے آپ دوسرے منصوبوں پر کام کررہے صاف پانی کا منصوبہ بھی شہریوں کو مہیا کردیں اس پر شہباز شریف صاحب کا تاریخی جواب ” پانی کا منصوبہ زیریں زمین ہوتا لوگوں کو نظر نہیں آتا اور جب تک لوگوں کو کوئی چیز نظر نہیں آئے گی لوگ آپکو منتخب کیسے کریں گے ۔

عمران خان کی حکومت یوں تو بہت سے بحرانوں کا شکار رہی لیکن سب سے بڑا چیلنج جو اس حکومت کو بھگتنا پڑرہا ہے وہ ہے مہنگائی ، عام عوام کی ضروت کی چیزیں اب انکی پہنچ سے دور ہوتی دیکھائی دے رہی ، عمران خان کو شب اچھا ہے کی رپورٹ دینے والوں پر شاباشی بنتی ہے جو غریب کا درد عمران خان تک نہیں پہنچا رہے ۔ پھر اگر یہاں ہم شہباز شریف کی مثال دیں تو برا نہ ہوگا کیونکہ کم از کم وہ اگر عوام کو بیوقوف بناتے تھے لیکن عوام ان کے گن بھی تو گاتی تھی اب عدلیہ نے چونکہ نواز شریف کو نااہل قرار دیا تب بھی یہ عوام نواز شریف کو اگلا وزیراعظم دیکھنا چاہتی صرف اسلئے کیونکہ مہنگائی انہوں نے بھی کی لیکن ایسے ڈائریکٹ بم عوام پر نہیں پھوڑا تھا ۔ایک غریب بندے کو چالیس ہزار کا بجلی کا بل تما دیتے اور پھر کہتے غریب عوام دوست بجٹ جب کہ وہ بیچارہ تو وہیں آدھا مرگیا ہوگا جب اس کو اتنا زیادہ بل بھیجا اور اسکی کل آمدنی ہی دو سے تین ہزار ۔ موجودہ حکومت نے خواہ بہت بڑے بڑے منصوبے پاکستان کیلئے کئے لیکن خدارا ان منصوبوں کی وجہ سے ان غریب عوام کا نچوڑ نا نکالیں جنہیں پتہ بھی نہیں کہ گوادر پورٹ یا پھر سیاحت، بلین ٹری جیسی چیزیں ہیں کیا