fbpx

میرےبچوں کو 10 سال قبل اغوا کرنے والی ملزم خاتون گرفتار صوفیا مرزا کا دعویٰ

پاکستانی ماڈل و اداکارہ صوفیا مرزا کا کہنا ہے کہ ان کے بچوں کو 10 سال قبل اغوا کرنے والی ملزم خاتون کو وفاقی تحقیقاتی ادارے (ایف آئی اے) نے گرفتار کرلیا ہے-

باغی ٹی وی : صوفیا مرزا نے اپنے تصدیق شدہ انسٹاگرام اکاؤنٹ پر 2 منٹ سے زائد دورانیے کی ویڈیو میں اس بات پر تشکر کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ایک دہائی بعد بلآخر ان کے بچوں کو اغوا کرنے والے گروہ میں شامل مرکزی خاتون ملزم گرفتار ہوگئیں۔

اداکارہ نے ویڈیو میں بتایا کہ ایف آئی اے نے مرکزی ملزمہ صدف ناز کو پاکستان سے دبئی منتقل ہوتے وقت ایئرپورٹ پر گرفتار کیا، جو کہ ان کے بچوں کی جعلی ماں بنی ہوئی تھیں۔

اداکارہ نے اپنے بچوں کے اغوا سے متعلق بتایا کہ ان کے سابق شوہر عمر فاروق ظہور نے خاتون صدف ناز اور ان کے دیگر دو ساتھیوں سے مل کر ان کے بچوں کو پاکستان سے اغوا کرکے دبئی اسمگل کیا۔

اداکارہ نے دعویٰ کیا کہ ان کے سابق شوہر اور صدف ناز نے ان کے بچوں کے ‘ب فارم’ اور ‘برتھ سرٹیفکیٹ’ سمیت دیگر دستاویزات تبدیل کیے اور صدف ناز ایک دہائی سے ہی ان کے بچوں کی ماں بنی ہوئی تھیں۔

انہوں نے ویڈیو میں کہا کہ ان کے سابق شوہر اور صدف ناز کا گروہ بااثر ہے اور اس گروہ کے باقی تمام افراد تاحال مفرور ہیں اور ان کے بچے بھی تاحال دبئی میں ہیں۔

اداکارہ نے وزیر اعظم عمران خان سے مدد کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ ان کے بچوں کو بازیاب کروایا جائے اور ساتھ ہی انہوں نے مداحوں کو بھی بچوں کی بازیابی کے لیے ساتھ دینے کی اپیل کی۔

اداکارہ نے صدف ناز کی گرفتاری کو حالیہ دور حکومت کا اچھا کام قرار دیتے ہوئے کہا کہ ان کے بچوں کی جعلی ماں بننے والی خاتون کو ایئرپورٹ سے گرفتار کیا گیا۔

اگرچہ اداکارہ نے صدف ناز نامی خاتون کو گرفتار کرنے سے متعلق بتایا تاہم انہوں نے یہ نہیں بتایا کہ ایف آئی اے نے حراست میں لی گئی خاتون کو عدالت میں پیش کیا یا نہیں اور انہیں کب گرفتار کیا گیا تھا؟

خیا ل رہے کہ اس سے قبل گزشتہ ماہ جنوری میں ماڈل و اداکارہ نے لاہور ہائی کورٹ میں بچوں کی بازیابی کے لیے درخواست بھی دائر کی تھی، جس پر عدالت نے اداکارہ کے بچوں کی اغوا سے متعلق وزارت داخلہ سمیت دیگر متعلقہ اداروں سے رپورٹ طلب کی تھی۔

دوسری جانب ستمبر 2019 میں ایف آئی اے نے تصدیق کی تھی کہ اداکارہ و ماڈل صوفیا مرزا کے خلاف منی لانڈرنگ کی تفتیش شروع کردی گئی ہے۔

ایف آئی اے نے بتایا تھا کہ قومی احتساب بیورو (نیب) کی جانب سے انہیں کیس منتقل کیے جانے کے بعد اداکارہ کے خلاف منی لانڈرنگ کی تفتیش شروع کی گئی۔

ایف آئی اے کی جانب سے تفتیش شروع کیے جانے سے قبل اداکارہ نے سوشل میڈیا کے ذریعے بتایا تھا کہ ان کے خلاف سابق شوہر ہی جھوٹی مہم چلا رہے ہیں۔

اداکارہ کے حوالے سے اگست 2019 میں خبریں آنا شروع ہوئی تھیں کہ وہ بھی ماڈل ایان علی کی طرح منی لانڈرنگ میں ملوث ہیں تاہم اداکارہ نے اپنی سوشل میڈیا پوسٹس میں ان الزامات کی تردید کی تھی تاہم ستمبر 2019 میں ایف آئی اے نے تصدیق کی تھی کہ اداکارہ کے خلاف منی لانڈرنگ کی تفتیش شروع کردی گئی-

ماں کے علاج کیلئے ادھار پیسے مانگنے پر دوست نے جنسی ہراساں کیا راکھی ساونت

لاہور میں پلازہ پر قبضہ واگزار کروانے پر حمیرا ارشد سمیت دیگر فنکار لاہور پولیس کے شکرگزار

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.