fbpx

مینار پاکستان، لڑکی سے دست درازی،تحقیقات کیلئے کمیٹی قائم،افسران لڑکی کے گھر پہنچ گئے

مینار پاکستان، لڑکی سے دست درازی،تحقیقات کیلئے کمیٹی قائم،افسران لڑکی کے گھر پہنچ گئے

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق گریٹر اقبال پارک میں خاتون سے بدتمیزی کے واقعے کی انکوائری کیلئے آئی جی پنجاب نے تین رکنی کمیٹی قائم کردی ہے

نوٹیفکیشن کے مطابق کمیٹی کے کنوینر ایڈیشنل آئی جی سردار علی خان ہوں گے جب کہ ڈی آئی جی یوسف ملک اور ایس ایس پی اسماعیل امجد کمیٹی کا حصہ ہیں انکوائری کمیٹی اس امر کا تعین کرے گی کہ یوم آزادی پر ہجوم کے پیش نظر گریٹر اقبال پارک میں سکیورٹی کے کیا انتظامات تھے، وقوعہ کے وقت پولیس کا رسپانس کیسا تھا، ایف آئی آر کے اندراج میں تاخیر کا کیا جواز ہے،کمیٹی وقوعے سے پہلے، وقوعےکے دوران یا بعد میں پولیس کی کوتاہی اورغلطی کا تعین بھی کرے گی

دوسری جانب ڈی آئی جی آپریشنز ساجد کیانی شاہدرہ کے علاقے میں متاثرہ لڑکی عائشہ اکرم کے گھر گئے جہاں انہوں نے لڑکی سے ہمدردی کا اظہارکیا ساجد کیانی نے آئی جی پنجاب اور سی سی پی اولاہورکی طرف سےعائشہ اکرم کو انصاف کی یقین دہانی کراتے ہوئے کہا کہ عائشہ اکرم کی بہادری دوسری لڑکیوں کیلئے مشعلِ راہ ہے

سی سی پی او لاہور اور کمشنر لاہور کی مینارِ پاکستان وقوعہ کی متاثرہ لڑکی کے گھر آمد ہوئی ہے،سی سی پی او اور کمشنر لاہور نے متاثرہ لڑکی ،اس کی والدہ اور بھائی سے ملاقات کی افسران نے متاثرہ لڑکی سے اظہار ہمدردی اور انصاف کی یقین دہانی کی ،متاثرہ لڑکی کا کہنا تھا کہ ریسکیو کرنے والے ڈولفن اہلکار کی بہت بہت مشکور ہوں،مجھے سیکنڈ لائف ڈولفن ٹیم کی وجہ سے ملی،

دوسری جانب یہ انکشاف سامنے آیا ہے کہ گریٹراقبال پارک میں 60 سی سی ٹی وی کیمرے نصب ہیں،35خراب ہیں،یوم آزادی پرہزاروں لوگ مینار پاکستان کا رخ کرتے ہیں صرف ایک سیکیورٹی گارڈ تعینات تھا آپریشنل کیمروں کی مدد سے ملزمان کی شناخت نہیں ہوسکتی اتنے بڑے ہجوم کوسنبھالنے کےلیےاکلوتا سیکیورٹی گارڈ منع کر رہا ہے، خاتون کے ساتھ دست درازی کا واقعہ دن کی روشنی میں شروع ہوا، مینار کے عین نیچے سینکڑوں کی تعداد میں لوگوں نے لڑکی کو گھیر رکھا ہے، کیمرے وولٹیج کم زیادہ ہونے اور عوام کے پتھراؤ سے خراب ہوئے،

قبل ازیں ترجما ن پنجاب حکومت جات فیاض الحسن چوہان کا کہنا تھا کہ اقبال پارک میں خاتون کو ہراساں کرنے کا واقعہ انتہائی شرمناک ہے جس کے باعث چند سو افراد کے قبیح فعل نے پورے معاشرے کا سر شرم سے جھکا دیا ہے۔ خاتون کو ہراساں کرنے کے واقعے کی ایف آئی آر کاٹی جا چکی ہے اور ویڈیو کی مدد سے ملوث ملزمان کی نشاندہی کی جا رہی ہے وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار کی ہدایت پر ملزمان کو سخت سزا دی جائے گی اور پنجاب حکومت ملزمان کو کیفر کردار تک پہنچائے گی اطلاعات کے مطابق ویڈیو فوٹیج سے نادرا کی مدد سے 7 افراد کی نشاندہی ہوگئی ہے جس کی گرفتاری کے لئے پولیس کی ٹیمیں تشکیل دے دی گئی ہیں ،

دس برس تک سگی بیٹی سے مسلسل جنسی زیادتی کرنیوالے سفاک باپ کو عدالت نے سنائی سزا

شادی شدہ خاتون کے ساتھ اجتماعی زیادتی کے بعد ملزمان نے ویڈیو وائرل کر دی

وفاقی دارالحکومت میں ملزم عثمان مرزا کا نوجوان جوڑے پر بہیمانہ تشدد،لڑکی کے کپڑے بھی اتروا دیئے، ویڈیو وائرل

نوجوان جوڑے پر تشدد کرنیوالے ملزم عثمان مرزا کے بارے میں اہم انکشافات

لڑکی کو برہنہ کرنیوالے ملزم عثمان مرزا کو پولیس نے عدالت پیش کر دیا

کیا فائدہ قانون کا، مفتی کو نامرد کیا گیا نہ عثمان مرزا کو،ٹویٹر پر صارفین کی رائے

لڑکی کو برہنہ کرنے کی ویڈیو، وزیراعظم عمران خان کا نوٹس، بڑا حکم دے دیا

عثمان مرزا کی جانب سے لڑکی اور لڑکے پر تشدد کے بعد نوجوان جوڑے نے ایسا کام کیا کہ پولیس بھی دیکھتی رہ گئی

نوجوان جوڑے پر تشدد کیس، پانچویں ملزم کو کس بنیاد پر گرفتار کیا؟ عدالت کا تفتیشی سے سوال

ویڈیو کس نے وائرل کی تھی؟ عدالت کے استفسار پر سرکاری وکیل نے کیا دیا جواب

نوجوان جوڑے کو برہنہ کرنے کا کیس،ملزم عثمان مرزا کو عدالت نے کہاں بھجوا دیا؟

نوجوان جوڑے کو برہنہ کرنے کا کیس،ملزم عثمان مرزا کے والدین بھی عدالت پہنچ گئے

مینار پاکستان، لڑکی سے دست درازی کا واقعہ،بلاول بھی خاموش نہ رہ سکے

مینار پاکستان، لڑکی سے دست درازی کا واقعہ، حکومتی شخصیت کا متاثرہ لڑکی سے رابطہ

پر تشدد رویہ تبدیل کرنے کی ضرورت ہے،شیریں مزاری

مینار پاکستان، لڑکی سے دست درازی کے واقعہ پر وزیراعظم عمران خان کا نوٹس

مینار پاکستان، لڑکی سے دست درازی ،بختاور زرداری بھی پھٹ پڑیں

واضح رہے کہ سینکڑوں افراد کی خاتون ٹک ٹاکر سے بدتمیزی، کپڑے پھاڑ کرہوا میں اچھالتے رہے لاہور میں 14 اگست کو گریٹر اقبال پارک میں منچلوں نے ایک خاتون سے بدتمیزی کی، کپڑے پھاڑ ڈالے اور اسے ہوا میں اچھالتے رہے۔ ذرائع کے مطابق یہ واقعہ 14 اگست کو رونما مگراس کی ویڈیو ایک دن بعد وائرل ہوئی جس پر فوٹیج وائرل ہو نے پر پولیس نے 400 افراد کے خلاف مقدمہ درج کر لیا۔ وزیر اعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے ملزمان کی فوری گرفتاری کا حکم دے دیا ہے۔ لاہور پولیس کے مطابق 14 اگست جشن آزادی کا دن، لوگوں کی بڑی تعداد گریٹر اقبال پارک میں جمع، ٹک ٹاکر خاتون عائشہ اکرام اپنے دو ساتھیوں عامر سہیل اور صدام حسین کے ساتھ وہاں پہنچیں اور ویڈیوز بنانا شروع کر دیں۔

پولیس کا کہنا ہے کہ اچانک منچلوں کے ایک گروہ نے خاتون پر ہلہ بول دیا، کپڑے پھاڑے اور انہیں ہوا میں اچھالتے رہے، خاتون دہائی دیتی رہی جو کسی نے نہ سنی۔ خاتون نے بڑی مشکل سے جان چھڑائی، اس ہنگامہ آرائی کی ویڈیو وائرل ہوئی تو پولیس نے 400 افراد کے خلاف مقدمہ درج کرلیا۔مقدمے میں سرعام خاتون کو برہنہ کرنے اور ہنگامہ آرائی کی دفعات شامل ہیں۔وزیر اعلیٰ پنجاب نے واقعے کا نوٹس لیتے ہوئے ویڈیو آئی جی کو بھیجی اور ملزمان کی گرفتار ی سے متعلق رپورٹ طلب کر لی۔دوسری طرف متاثرہ لڑکی کا کہنا ہے کہ میں اور میرے کیمرا مین 14 اگست کو مینار پاکستان میں کورج کر رہے تھے کہ 300 سے 400 نامعلوم افراد نے ہم پر حملہ کر دیا سیکیورٹی گاڑدز نے مینار پاکستان کا پچھلا دروازہ کھولا تاکہ ہم بچ سکیں تاہم لوگ وہاں بھی اندر آگئے نامعلوم افراد نے تشدد کیا ،کپڑے پھاڑے ہمارا موبائل فون ، طلائی زیورات اور 15ہزار نقدی بھی لے گئے

مینار پاکستان، لڑکی سے دست درازی،آئی جی پنجاب نے پولیس کو کیا حکم دے دیا؟