fbpx

مشن کشمیر،وزیراعظم عمران خان سےانڈونیشیا کےنائب صدریوسف کالاکی ملاقات

وزیراعظم عمران خان سےانڈونیشیا کےنائب صدریوسف کالاکی ملاقات ہوئی ہے

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق ملاقات میں دوطرفہ تعلقات اورمقبوضہ کشمیرکی صورت حال پر تبادلہ خیال کیا گیا، وزیراعظم  نے دونوں ملکوں کےدرمیان قریبی اورتاریخی تعلقات پر اطمینان کااظہار کیا،وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ امید ہےانڈونیشیاکشمیریوں کی حالت زارپرپاکستان کےموقف کی حمایت کرےگا،انڈونیشیااقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کاغیرمستقل رکن ہے ،

 

وزیراعظم عمران خان نے کہاکہ پاکستان منی لانڈرنگ کےخاتمے،لوٹی گئی رقم کی واپسی کے لیے اقدامات کررہا ہے، اگرمنی لانڈرنگ نہ ہوتویہ رقم غربت کےخاتمےاورترقی پرخرچ ہو، منی لانڈرنگ کےخاتمےکےلیےامیرملکوں میں سیاسی عزم کی ضرورت ہے، حیران ہوں کہ امیرملک آف شورکمپنیوں کی اجازت کیوں دیتےہیں، غریب ملکوں سےپیسہ لوٹ کرلے جانے والوں کےخلاف سخت کارروائی کی جائے، اقوام متحدہ میں میرےآنےکابنیادی مقصدہی مسئلہ کشمیرکواٹھاناہے، امریکی میڈیا کو انٹرویو دیتے ہوئے بھی وزیراعظم عمران خان نے کہاکہ کوئی باشعورآدمی ایٹمی جنگ یاایٹمی ہتھیاروں کےبارےمیں سوچ بھی نہیں سکتا،

سعودی ولی عہد اور امریکی صدر نے ایران سے ڈٰیل کرنے کا کہا، وزیراعظم

کشمیر پر بات کرنے پر شکر گزار، ترک صدرپاکستان کب آئیں گے؟ وزیراعظم نے بتا دیا

وزیراعظم عمران خان نے کہاکہ مقبوضہ کشمیرمیں53روزسے80لاکھ سےزیادہ لوگ محصورہیں، اس میں کوئی شک نہیں کہ مقبوضہ کشمیرمیں انسانی بحران پیداہورہا ہے، کشمیرمیں صورتحال کنٹرول کرنے کیلئےٹرمپ کومداخلت کرنی چاہیے، مقبوضہ کشمیرمیں9لاکھ بھارتی فوجی تعینات ہے، قبل ازیں نیویارک ٹائمز کے ایڈیٹرز سے ملاقات میں گفتگو کرتے ہوئے وزیراعظم نے کہاکہ تقریر سے کچھ نہ ہوا تو دنیا کوپتہ چل جائیگا کہ کشمیر میں کیا ہورہاہے، کرفیواٹھنے پر مقبوضہ کشمیر میں قتل عام کا خدشہ ہے،

فغان طالبان مجھ سے ملنا چاہتے تھے لیکن کسی ملک کو اعتراض تھا، وزیراعظم

کشمیر پر دو ایٹمی طاقتیں آمنے سامنے آ سکتی ہیں،وزیراعظم عمران خان کا اقوام متحدہ میں خطاب

اقوام متحدہ مداخلت کرے، تقریر سے کچھ نہ ہوا تو دنیا کو پتہ چل جائے گا کشمیر میں کیا ہو رہا ہے، وزیراعظم