معمولی جرائم میں ملوث افراد سرینڈر کریں تو معافی مل سکتی ہے،شرجیل میمن

0
95
sharejeel

سندھ کے سینئر صوبائی وزیر، وزیر اطلاعات شرجیل میمن نے کہا ہے کہ ہم انشاء اللہ اٹھائیس جون تک صوبائی بجٹ پاس کرالیں گے۔
میڈیا سے بات کرتے ہوئے شرجیل میمن کا کہنا تھا کہ سنگین جرائم میں ملوث افراد کو معافی نہیں، مگر جو افراد معمولی جرائم میں ملوث ہیں وہ ہتھیار پھینک کر سرینڈر کریں، اپنے آپ کو قانون کے حوالے کریں، تو ان کو معافی مل سکتی ہے۔ جو ڈاکو پکڑے گئے اور جیل میں ہیں انکو موقع دیا جائے کہ وہ توبہ کر لیں، ایسا نہیں ہو سکتا، قبائلی جھگڑے ختم کئے جائیں، اس کے لئے مفاہمت کا راستہ اپنایا جائے گا، جو لوگ کچے میں وارداتیں کر رہے ہیں اس میں قبائلی سرداروں کو انگیج کیا جائے کہ ان سے بات کریں، جو معافی مانگے گا، سرنڈر کرے گا، اس سے بات چیت ہو گی پھر کوئی راستہ نکلے گا، اگر منشیات فروش اپنا کام جاری رکھے گا تو کوئی معافی نہیں، ہم تمام ان لوگوں سے جو اس طرح کے واقعات میں ملوث ہیں انکے وارننگ اور آفر ہے،

شرجیل میمن کا مزید کہنا تھا کہ صدر آصف زرداری کا دورہ انتہائی اہم تھا،انہوں نے سیکورٹی امور پر اجلاس کئے، صدر مملکت کی ہدایات پر ہم عمل کریں گے،کراچی میں اسٹریٹ کرائم میں کمی ہوئی ہے، جنوری میں جو وارداتیں ہوئی اس حساب سے اب کمی آئی ہے، کل آئی جی سندھ سے بریفنگ لی تھی،حکومت نے سیکورٹی فورسز کو جدید اسلحہ دینا شروع کر دیا ہے، پولیس کی مراعات میں اضافہ کیا جا رہا ہے،سندھ میں ڈاکوؤں، منشیات فروشوں کے خلاف آپریشن ہو رہا ہے، آپریشن عزم استحکام کو ویلکم کرتے ہیں،دہشت گردوں کے خلاف آپریشن ہونا چاہئے،پیپلز پارٹی وفاقی حکومت کا حصہ نہیں ہے، اگر پیپلز پارٹی ووٹ نہ دے تو بجٹ پاس ہونا مشکل ہے لیکن پیپلز پارٹی یہ نہیں چاہتی کہ ملک افرا تفری کا شکار ہو، پیپلز پارٹی ملک میں جمہوریت کی بالادستی چاہتی ہے.

آپریشن عزم استحکام کا مقصد کیا؟ وزیراعظم آفس سے اعلامیہ جاری

آپریشن عزم استحکام کی مخالفت کر کے کیا پی ٹی آئی ملک دشمن قوتوں کی حمایت کر رہی ہے؟ شیری رحمان

ماضی کے جتنے آپریشن ہوئےانکے نتائج تو سامنے رکھیں،مولانا فضل الرحمان

ایپکس کمیٹی میں ایک نام عزم استحکام آیا لیکن آپریشن کا ذکر نہیں تھا،وزیراعلیٰ خیبرپختونخواہ

آپریشن عزم استحکام،کامیابی کیلئے اتحاد ضروری،تجزیہ: شہزاد قریشی

وفاقی کابینہ اجلاس، آپریشن عزم استحکام کی منظوری دے دی گئی

شرجیل میمن کا کہنا تھا کہ کچے میں آپریشن جاری ہے، اور جاری رہے گا، پہلے سے کچے کے حالات بہتر ہیں اور مزید بہتر ہوں گے،سرداروں کے آپسی جھگڑے حل کرنا ہوں گے تاہم عوام کو بچایا جا سکے، سرداروں کو مفاہمت کے لئے انگیج کیا جائے گا،حکومت سندھ بھر میں امن و امان قائم کرے گی.منشیات فروشوں کے خلاف قائم ریپڈ رسپانس فورس کا ہیلپ لائن نمبر "634 374 111 021” ہے،

شرجیل میمن کا مزید کہنا تھا کہ پیپلز بس سروس کے مزید نئے روٹس شروع کر رہے ہیں، شہید بینظیر آباد میں اس ہفتے پیپلز بس سروس شروع کی جائے گی۔

Leave a reply