موجودہ حکومت کیساتھ مختلف شعبوں میں تعاون کررہے ہیں، چینی سفیر

پاکستان میں چین کے سفیر یاؤ جنگ نے کہا ہے کہ امید ہے کہ کشمیر کا مسئلہ پرامن طریقے سے بات چیت کے ذریعے حل ہوگا

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق سی پیک سے متعلق ایریا اسٹڈی سینٹر پشاور یونیورسٹی میں دو روزہ بین الاقوامی کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے چینی سفیر یاؤ جنگ کا کہنا تھا کہ پشاور سے کابل اور وسطی ایشیا تک ہائی وے کی تعمیر پر تینوں ممالک کا اتفاق ہوا ہے،چینی وزیر خارجہ کے دورہ پاکستان میں چین، پاکستان،افغانستان کے درمیان تجارتی مواقع بڑھانے پراتفاق ہوا ہے،جنوبی اور وسطی ایشیا کے درمیان تجارت کیلیے طورخم بارڈراہم روٹ ہے ،طورخم بارڈر تجارت کے لحاظ سے ایک اہم سرحد اورتاریخی روٹ ہے،پاکستان کی موجودہ حکومت کیساتھ مختلف شعبوں میں تعاون کررہے ہیں،

سی پیک اتھارٹی اور پاک چائنہ بزنس کونسل بنانے کا حکومتی فیصلہ

سی پیک میں ایران بھی اہم کردار ادا کرنے کو تیار

چینی سفیر کا مزید کہنا تھا کہ ہمیں بھی امریکا اور طالبان کے مابین مذاکرات ختم ہونے کا علم اچانک ہوا،ہرکوئی امریکا اورطالبان کے مابین مذاکرات کوامید کی نگاہ سے دیکھ رہا تھا، یہ قیام امن کیلیےایک اہم موقع تھا، مذاکراتی عمل جاری رکھنا چاہیے،

آصف زرداری کے دور میں سی پیک کی بنیاد رکھی گئی، چینی سفیر کی رحمان ملک سے گفتگو

چینی سفیر نے مزید کہا کہ امید ہے کہ کشمیر کا مسئلہ پرامن طریقے سے بات چیت کے ذریعے حل ہوگا،عالمی برادری نے بھی مسئلہ کشمیر کی صورتحال پر تشویش کا اظہار کیا ہے، پاکستان دیرینہ اور بے مثال دوست ہے،خطےمیں ہرقسم کی جارحیت،مقبوضہ کشمیرمیں بھارتی مظالم کی مذمت کرتے ہیں ،پاکستان اورچین مقبوضہ کشمیرکےحوالے سے اپنےاصولی موقف پرقائم ہیں ،سی پیک کےتحت جاری منصوبوں پرکام میں مزیدتیزی لائی جائےگی،

کشمیرپرپاکستان اورچین کا موقف یکساں، چیئرمین سینیٹ سے چینی سفیر کی ملاقات

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.