fbpx

موجودہ حکومت نے ریکارڈ قرضے واپس کیے ،وزیراعظم

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ حکومت میں آنے کے بعد سب سے بڑا مسئلہ مالی خسارہ تھا،

وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ اپنےکرکٹرزاوربینکرزکوخاص طورپرخوش آمدید کہتا ہوں،بیرون ملک مقیم پاکستانی ملک کا بڑا اثاثہ ہیں،جب تک روپیہ مضبوط نہیں ہوگا، معیشت مضبوط نہیں ہوگی، کورونا کے دور میں ہماری برآمدات میں رکارڈ اضافہ ہوا ہے،شوکت خانم کیلئے جب فنڈز اکٹھے کیے توسب سے زیادہ اوورسیزپاکستانیوں  نے حصہ لیا،کرنسی گرتی ہے توسب سےزیادہ بوجھ غریب پرپڑتاہے،

وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ مالی خسارے کاسب سے زیادہ اثر ملک کی کرنسی پر ہوتا ہے، غریب عوام اورتنخواہ دارطبقے کو مشکلات کا سامنا ہے ،بہتر اقدامات سے اب ہمارے ایکسپورٹ میں اضافہ ہورہا ہے،روپےکو مستحکم رکھنے کیلئے بھی روشن ڈیجیٹل اکاوَنٹ اہم پیشرفت ہے ،پہلے لوگ ٹیکسٹائل سے ریئل اسٹیٹ میں جا رہے تھے،پاکستانی تاریخ میں موجودہ حکومت نے ریکارڈقرضے واپس کیے ،20 ارب ڈالرز واپس کر چکے ہیں،ٹوٹل 6 ہزار ارب روپے قرضوں کی قسطیں دے چکے ہیں ، کورونا کے باوجود معاشی استحکام آرہا ہے معاشی بہترین کیلئےبینکوں کا کردار اہم ہے،

گورنر اسٹیٹ بینک رضا باقر کا کہنا تھا کہ آج اسٹیٹ بینک کیلئے خوشی کا دن ہے،وزیراعظم کے وژن کی روشنی میں اسٹیٹ بینک نے وہ اقدامات کیے جو پہلے نہیں ہوئے ،بیرونی ملک پاکستانی قوم کا اہم اثاثہ ہیں،روشن ڈیجیٹل اکاوَنٹ کے ذریعے بھیجی گئیں ترسیلات زر500 ملین ڈالرز سے بڑھ گئیں ،اوورسیز پاکستانی اپنا اکاوَنٹ گھربیٹھ کراستعمال کرسکتے ہیں ،

گورنر اسٹیٹ بینک رضا باقر کا کہنا تھا کہ بیرون ملک پاکستانیوں کودعوت دیتا ہوں کہ روشن ڈیجیٹل اکاوَنٹ کو آزمائیں ،روشن ڈیجیٹل اکاوَنٹ نے 500 ملین ڈالرز ترسیلات زرکا ٹارگٹ حاصل کر لیا،اندازے کے مطابق اوورسیز پاکستانیوں کی تعداد 70سے 90 لاکھ ہے،صرف 5 ماہ میں 97 ملکوں سے 88 ہزار اکاؤنٹ کھولے گئے،

گورنر اسٹیٹ بینک رضا باقر کا کہنا تھا کہ روشن ڈیجیٹل اکاؤنٹس سے 88 ہزار بیرون ملک پاکستانی فائدہ اٹھارہے ہیں بیرون ملک مقیم پاکستانیوں کو ڈیجیٹل اکاؤنٹس کی وجہ سے سرمایہ کاری میں آسانی ہوگی

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.