وزارت خارجہ کا بیان کافی نہیں، مودی خود ٹرمپ کے بیان کی وضاحت کریں، راہول گاندھی کا مطالبہ

بھارت میں اپوزیشن جماعت کانگریس کے سابق صدر راہل گاندھی نے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے اس بیان کہ نریندر مودی نے انہیں مسئلہ کشمیر پر ثالثی کیلئے کہا ہے، پر شدید ردعمل ظاہر کرتے ہوئے ہندوستانی وزیرا عظم پر سخت تنقید کی ہے،


باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق راہل گاندھی نے سوشل میڈیا سائٹ ٹویٹر پر اپنے پیغام میں کہا ہے کہ اگرٹرمپ کا دعویٰ صحیح ہے تو ہندوستانی وزیراعظم نریندرمودی نے ملک کے مفاد کیخلاف کام کیا اور1972 کے شملہ معاہدے کو دھوکہ دیا ہے، اس معاملے پروزارت خارجہ کا بیان کا فی نہیں ہے، بھارتی روزیراعظم نریندرمودی کو خود جواب دینا چاہئے،

راہل گاندھی نے ٹویٹ کرتے ہوئے لکھا کہ ایک کمزور وزارت خارجہ کی تردید ہی کافی نہیں ہے، نریندر مودی کوقوم کوبتانا چاہئے کہ ٹرمپ اوران کے درمیان میٹنگ میں کیا ہوا تھا، واضح رہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے پاکستانی وزیراعظم عمران خان سے ملاقات کے دوران نریندر مودی سے متعلق کہا تھا کہ انہوں‌ نے میرے ساتھ مسئلہ کشمیر پرثالثی کرنے کے لئے کہا ہے. امریکی صدر کے اس دعویٰ پر آج بھارتی لوک سبھا میں بھی شدید ہنگامہ آرائی ہوئی ہے،

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.