fbpx

سعودی عرب میں 14 ہزار سے زائد غیرملکی تارکین وطن گرفتار:پاکستانی بھی شامل

ریاض :سعودی عرب میں 14 ہزار سے زائد غیرملکی تارکین وطن گرفتار:پاکستانی بھی شامل سعودی اطلاعات کے مطابق سیکیورٹی فورسز نے غیرقاونی طور پر ریاست میں داخل ہونے والے ہزاروں تارکین وطن کو گرفتار کرلیا۔

غیر ملکی میڈیا کے مطابق خلیجی ریاست سعودی عرب کی سیکیورٹی فورسز ریاست میں امن و استحکام برقرار رکھنے کےلیے ہر کچھ ماہ بعد غیرقانونی تارکین وطن اور سعودی قوانین کی خلاف ورزی کرنے والے تارکین وطن کے خلاف بڑی کارروائی کرتی ہیں جس میں گرفتار غیرملکیوں کو ملک بدر کردیا جاتا ہے۔

حالیہ کارروائی 12 دسمبر سے 29 دسمبر کے درمیان کی گئی جس میں 14 ہزار 227 افراد کو گرفتار کیاگیا۔

غیر قانونی تارکین سے پاک وطن مہم کے تحت کام کرنے والی مشترکہ کمیٹی نے کہا ہے کہ ’گرفتار شدگان میں سے 7301 افراد اقامہ قوانین، 5300 گرفتار شدگان سرحدی قوانین جبکہ 1626 افراد لیبر قوانین کی خلاف ورزی کے مرتکب تھے۔رپورٹ کے مطابق 51 فیصد یمنی، 45 فیصد ایتھوپین جبکہ 4 فیصد دیگر ملکوں رہائشی ہیں۔

ریاض میں تفتیشی ٹیموں نے گزشتہ دو ماہ میں 377 خلاف ورزیاں ریکارڈ کیں۔ تفتیشی ٹیموں میں ریاض گورنریٹ، پولیس، بلدیہ اور دیگر اداروں کے اہلکار شامل تھے۔

ادھر کے مطابق قانون نافذ کرنے والے اداروں کے اہلکاروں پر مشتمل ٹیم نے تفتیشی کارروائی کے دوران اقامہ قوانین کی 287 خلاف ورزیاں ریکارڈ کی جبکہ محنت کے قانون پر82 اور تجارتی پردہ پوشی پر آٹھ چالان کیے۔

تفتیشی ٹیموں نے ریجن کے متعدد بازاروں کا دورہ کیا جن می سبزی منڈی، پرانا سامان فروخت کرنے والی مارکیٹ ’حراج‘ اور دیگر مقامات شامل تھے۔مختلف ادارو پرمشتمل تفتیشی کمیٹی کی مشترکہ کارروائیوں کے حوالے سے ذرائع کا کہنا تھا کہ اقامہ قوانین کی مد میں سب سے زیادہ چالان کیے گئے جبکہ تجارتی پردہ پوشی پرخلاف ورزیوں کی تعداد سب سے کم رہی۔

واضح رہے اقامہ قوانین کی خلاف ورزی اس وقت درج کی جاتی ہے جب کوئی غیرملکی کارکن اپنے سپانسر کے علاوہ کسی دوسری جگہ کام کرے جبکہ تجارتی پردہ پوشی کی اصطلاح ایسے غیرملکیوں کے لیے استعمال کی جاتی ہے جو کسی سعودی شہری کے نام پر اپنا کاروبار کرتے ہیں

Facebook Notice for EU! You need to login to view and post FB Comments!