ایم کیو ایم کے مرکز نائن زیرو سے گرفتار دہشت گردوں کی درخواست ضمانت پر عدالت کا بڑا فیصلہ

ایم کیو ایم کے مرکز نائن زیرو سے گرفتار دہشت گردوں کی درخواست ضمانت پر عدالت کا بڑا فیصلہ

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق کراچی کی انسداد دہشت گردی عدالت میں کرونا کے باعث ایم کیو ایم کے دہشت گردوں کی ضمانت کی درخواستوں پرسماعت ہوئی۔

اس موقع پر رینجرز پراسیکیوٹرنے عدالت میں کہا کہ ملزمان کے خلاف سیکیورٹی فورسز کے اہلکاروں اور شہریوں کے قتل کے مقدمات زیر سماعت ہیں،سنگین جرائم میں ملوث ملزمان کو گیارہ مارچ 2015کو ایم کیوایم کے مرکز 90 سے گرفتار کیا گیا تھا،ایم کیوایم مرکز سے اسلحہ،گولہ بارود اور خود کار ہتھیاروں کی کھیپ برآمد ہوئی تھی۔

رینجرز پراسیکیوٹرعدالت کو آگاہ کیا کہ ملزموں کو جیل میں بہترطبی سہولیات فراہم کی جا رہی ہیں،ملزمان ضمانت پر رہائی ملنے کے بعد پھر دہشت گردی کرسکتے ہیں۔ جس پر عدالت نے ایم کیوایم مرکز 90 سے گرفتار 14 دہشت گردوں کی درخواست ضمانت مسترد کرتے ہوئے کہا کہ کیس کا ٹرائل حتمی مراحل میں ہے،ملزمان کو ضمانت پر رہا کرنے کا حکم نہیں دیا جاسکتا۔

ایم کیو ایم کی گرفتاریاں شروع، کس کو گرفتار کر لیا گیا؟

ایم کیو ایم مرکز نائن زیرو سے گرفتار ہونے والے ملزمان میں ایم کیوایم کا سابق سیکٹر انچارج فرحان شبیر،ندیم گڈو، امتیاز، ندیم اور دیگر شامل ہیں، 90 سے گرفتار دہشت گردوں نے طبی بنیادوں پر ضمانت کے لئے درخواستیں دائر کی تھیں. جنہیں عدالت نے مسترد کر دیا

واضح رہے کہ کرونا وائرس کی وجہ سے صوبائی عدالتوں نے قیدیوں کی رہائی کا حکم دیا تھا جسے سپریم کورٹ نے معطل کر دیا ہے،

بانی ایم کیو ایم شدید مشکلات کا شکار،لندن سیکرٹریٹ برائے فروخت کا بورڈ لگ گیا

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.