ایم ایس پھالیہ نے کورونا وائرس کے خلاف فرنٹ لائن پر لڑنے والے ینگ ڈاکٹرز کی تنخواہیں روک لیں

پھالیہ : ایک طرف ڈاکٹرزاانسانیت کی جانیں بچانے میں اپنی زندگیوں کوداوپرلگائے بیٹھے ہیں تودوسری طرف افسران اعلیٰ اپنی من مانیاں کرنے پرتلے ہوئے ہیں ، اطلاعات کےمطابق ایم ایس پھالیہ نے کورونا وائرس کے خلاف فرنٹ لائن پر لڑنے والے ینگ ڈاکٹرز کی تنخواہیں روک لیں۔ینگ ڈاکٹرز کا احتجاج۔ایم ایس کو تبدیل کرنے کا مطالبہ کردیا۔

ایم ایس ٹی ایچ کیو پھالیہ ڈاکٹر بشری چودھری کے خلاف ینگ ڈاکٹرز نے احتجاج کیا ہے۔ڈاکٹرز کا کہنا ہے کہ ایم ایس نے ہسپتال کو ذاتی جاگیر بنا رکھا ہے۔اور ایم ایس کی ینگ ڈاکٹرز سے بد تمیزی معمول بن چکی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ وبا کے دنوں میں سب کو مل جل کر کام کرنا چایئے لیکن ایم ایس نے ینگ ڈاکٹرز پر اپنے دفتر کے دروازے بند کررکھے ہیں۔ جس کے باعث ہسپتال میں معاملات چلانے میں دشواری پیش آرہی ہے۔ایم ایس نے بلا وجہ ینگ ڈاکٹرز کی تنخواہیں بھی روک روکھی ہیں۔

ینگ ڈاکڑز کاکہنا تھاکہ ایم ایس پھالیہ کو فوری طورپر تبدیل نہ کیا گیا تو احتجاج کا سلسلہ شتوع کہا جائیگا۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.