مساجد سینما نہیں ہے مساجد کا تقدس پامال کرنے والوں کے خلاف کاروائی کی جائے ٹویٹر ٹرینڈ ٹاپ پر

گذشتہ روز سوشل میڈیا پر اداکارہ صبا قمر اور بلال سعید کے گانے کی ویڈیو وائرل ہوئی ہے گانے کی عکس بندی مسجد وزیرخان میں کی گئی ہے جس میں مسجد کے تقدس کوپامال کیا گیا ہے۔

باغی ٹی وی :گلوکار بلال سعید اور اداکارہ صبا قمر کے نئے گانے قبول ہے کی ویڈیو کی مسجد وزیر خان میں شُوٹنگ اور رقص کی ویڈیو کو سوشل میڈیا پر عوام سمیت معروف شخصیات کی طرف سے تنقید کا نشانہ بنایا جا رہا ہے اور فنکاروں کے اس اقدام کی شدید مذمت کی جارہی ہے-

گذشتہ روز سے عوام ، مذہبی شخصیات سمیت معروف شخصیات کی جانب سے غم و غصے کا اظہار کرتے ہوئے حکومت سے کارروائی کرنے کا مطالبہ کیا جارہا ہے جس کے بعد دونوں فنکاروں نے مسجد میں ویڈیو بنانے کی وضاحت دیتے ہوئےعوام سے معافی بھی مانگی ہے-

تاہم پھر بھی ان فنکاروں کو معاف نہ کرنے اور ان کو سخت سزا دینے کا مطالبہ کیا جا رہا ہے یہاں تک کہ ٹویٹر پینل پر مسجد سینما نہیں ہے ٹرینڈ کر رہا ہے-


ایک صارف نے قرآن پاک کی آیات کا ترجمہ لکھا تم کہو ، وہ اللہ ہی ہے۔ اللہ ایک ہے ، اللہ بے نیاز ہےنہ اس نے کسی کو جنا اور نہ کسی سے جنا گیا اور نہ ہی کوئی اس کے برابر ہے –


جنت کھر نامی صارف نے لکھا کہ کیا یہ مدینہ کی ریاست ہے؟ آج کل مساجد میں گانوں کی شوٹنگ ، جوڑے کی فوٹو گرافی اور بہت ساری بہت سی جگہیں ہیں ۔بہترین یہ نہ بھولیں کہ یہ اللہ تعالی کا گھر ہے-


رانیہ نامی صارف نے لکھا کہ صبا قمر اور بلال سعید کے بارے میں نہیں ہےایک گلوکار اور رقاصہ یہ ان تمام لوگوں کے بارے میں ہے جو صرف شادی کی شوٹنگ کے لئے مسجد جاتے ہیں حکومت کو اس پر پابندی لگانی چاہئے-


احمد نامی صارف نے لکھا کہ اس میں کوئی شک نہیں کہ ہم اسلام کی بنیادی روح اور طاقت سے دور ہو رہے ہیں۔اور ہمیں اس کا خمیازہ بھگتنا پڑے گا اور اسی لئے ہم دنیا میں تنہا اور رسوا ہو رہے ہیں۔


تاشیر ایڈورٹائزمنٹ نامی اکاؤنٹ سے ٹویت کیا گیا کہ مقدس مقامات پر اس طرح کے بے ہودہ طریقوں پر سختی سے ممانعت کی جانی چاہئے۔ ہمیں اسلام اور اس کی تعلیمات کا احترام کرنا چاہئے۔ ہم مسلمان ہیں۔ اگر ہمیں اس کی پرواہ نہیں ہے تو ہم غیرمسلموں سے کیا توقع کریں گے؟


محمود ایاز نامی صارف نے مسجد وزیر خان انتظامیہ کے خلاف کاروائی کا مطالبہ کرتے ہوئے لکھا کہ مساجد اللہ کا گھر ہیں۔ مساجد کی توہین سے اہل اسلام اور پاکستان کو تکلیف ہوئی ہے۔ اجازت دینے پر انتظامیہ کے خلاف کارروائی کی جائے۔


محمود ایاز نامی صارف نے ایک اور ٹوئت مین لکھا کہ مساجد ڈراموں اور گانوں کی شوٹنگ ایک مسئلہ بن رہا ہے پہلے فیصل مسجد پھر بادشاہی مسجد اب وزیر خان مسجد میں حکومت اس مکرو ہات پر پابندی کیوں نہیں لگاتی؟


خرم نواز گنڈا پوری نے لکھا کہ مساجد میں فیشن شو ہونے والی شادیوں کے رواج پر پابندی عائد ہونی چاہئے۔ یہاں تک کہ ہندوستانی بھی سوشل میڈیا پر ہمارا مذاق اڑا رہے ہیں اور یہ کہہ رہے ہیں کہ ہمیں یہعنی پاکستانیوں اور مسلمانوں کو بابری مسجد کے بارے میں بات کرنے سے پہلے اپنے مساجد کا خیال رکھنا چاہئے۔


خرم نواز گنڈا پور نے مزید لکھا کہ بالآخر ، انہیں کسی مذہبی مقام کی بے عزتی کرنے پر سزا دی جانی چاہئے۔

مسجد میں گانے کے شوٹ کی اجازت کے تیس ہزار روپے لیے گئے ، نوٹیفیکیشن سامنے آ گیا

قبول ہے ایک گانا تھا ان کا اصل نکاح نہیں تھا کہ انہوں نے ایک مشہور مسجد کے مذہبی…

قبول ہے ایک گانا تھا ان کا اصل نکاح نہیں تھا کہ انہوں نے ایک مشہور مسجد کے مذہبی…

صبا قمر کی مسجد وزیرخان میں ڈانس کی ویڈیو وائرل

مسجد میں گانے کی ویڈیو پر صبا قمر نے معافی مانگ لی

مسجد وزیر خان میں ویڈیو پر وضاحت دیتے ہوئے بلال سعید نے معافی مانگ لی

اداکارہ صبا قمر اور بلال سعید کے خلاف مسجد کی بیحرمتی پر تھانہ مزنگ میں مقدمہ کی درخواست دے دی گئی

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.