ایک طرف کرونا تو دوسری طرف بھارتی فوج کی پاکستانی علاقے میں فائرنگ،حکمت ودانائی سے نمٹا جائے :مبشرلقمان نے اچھی خبر بھی سنادی

لاہور:ایک طرف کرونا تودوسری طرف بھارت کی طرف سے کشمیرکے محاذ پرمسلسل تین دن سے فائرنگ ،اس کے باوجود حالات میں بہتری دیکھ رہا ہوں ، اطلاعات کے مطابق پاکستان کے معروف صحافی ، سینیئرتجزیہ نگارمبشرلقمان نے پاکستان کے اج کے دن کے حالات کو احسن انداز سے بیان کرتے ہوئے کہا ہے کہ ایک طرف صورت حال خراب ہے تودوسری طرف ایک امید بھی ہے

سینیئرصحافی مبشرلقمان نے کہا کہ کرونا وائرس کی تباہ کاریاں جاری ہیں ، انہوں نے پاکستان میں آج کے دن تمام اضلاع میں کرونا کیسزکے بارے میں آگاہ کرتے ہوئے کہا کہ پنجاب سے کورونا وائرس کے مزید 74 کیسز سامنے آگئے

صوبے میں کورونا وائرس کے متاثرہ افراد کی تعداد 2410 ہوگئی، گجرات سے 30 مزید مریض سامنے آگئے، تعداد 129 ہوگئی، صوبائی دارلحکومت سے 23 نئے کیسز سامنے آگئے، تعداد 396 ہوگئی

 

ننکانہ صاحب میں 7 نئے کیسز سامنے آگئے،تعداد 16 ہوگئی،مبشرلقمان نے انکشاف کرتے ہوئے بتایا کہ تبلیغی جماعت کے 14 مزید مبلغین میں بھی کورونا کی تصدیق، صوبے میں تعداد 747 ہوگئی

مبشرلقمان نے لاہور میں کرونا کے بڑھتے ہوئے کیسز پرتشویش کا اظہارکرتے ہوئے کہا کہ ان بڑھتے ہوئے کیسز کی وجہ سے لاہور کے 13 علاقوں کو مکمل یا جزوی سیل کیا گیا،ایسے ہی رائیونڈ سٹی کو مکمل سیل کیا گیا

انہوں نے کہا کہ یہ شرح ہمارے لیے اچھی نہیں ہے .لاک ڈاون کو سخت کیا جارہا ہے تاکہ کرونا کے حملوں سے شہریوں کو محفوظ رکھا جائے ، مبشرلقمان نے مزید کہا کہ صورت حال ابترہوتی جارہی ہے ، جس کی وجہ سے حالات مزید مشکل ہوسکتے ہیں

سینیئرصحافی نے کہا کہ یہ ٹھیک ہےکہ کیسز بڑھتے جارہے ہیں لیکن یہ بھی خوشخبری سے کم نہیں کہ لوگ بڑی تعداد میں صحت یاب ہورہے ہیں ،انہوں نے کہا کہ میو اسپتال سے کورونا وائرس کے 8 مزید مریض صحتیاب ہوگئے

مبشرلقمان نے کہا کہ صوبائی دارلحکومت کے سب سے پہلے مریض نے بھی کورونا کو شکست دے دی،یہ نوجوان جس کا نام سلمان تھا برطانیہ سے واپس آیا تھا، اس کا خیال صیح نہیں رکھا جارہا تھا توہم نے آوازاٹھائی اورآج وہ صحت مند ہوکرواپس آگیا ہے ،انہوں نے اس حوالے سے اچھی خبر دیتے ہوئے کہا کہ صحتیاب ہونے والے 8 مریضوں کے دوبارہ کیے گئے ٹیسٹ منفی آئے،

مبشرلقمان نے کہاکہ کرونا سے نمٹنے کےلیے تمام تر حفاظتی اقدامات کرنے پڑیں گے ،ورنہ پھر رمضان المبارک مہینے میں بھی یہ صورتحال کا سامنا کرنا پڑتا ہے،مبشرلقمان نے کہا کہ اس دوران مسلسل تین دن سے بھارتی افواج کی طرف سے کشمیرکے محاذپرفائرنگ ہورہی ہے ، جس سے کئی افراد زخمی بھی ہوچکے ہیں‌،

انہوں نے کہا کہ یہ بھارتی وزیراعظم مودی کی ایک چال ہے وہ اپنی ڈوبتی معاشی کشتی کوسہارا دینے کےلیے کوئی بھی گھٹیا قدم اٹھا سکتا ہے، لوگ بے روزگارہوگئے ہیں ، مودی اپنی عوام کو دھوکہ دہی سے مطمئن رکھنا چاہتا ہے لیکن ایسا نہیں ہوگا

انہوں نے کہا کہ ہمیں کرونا سے نمٹنے کے لیے احتیاطی تدابیر کو بروئے کارلانا چاہیے ورنہ پھرلاک ڈاون سخت سے سخت ہوتا جائے گا اورپھرمعاملات بھی بگڑجائیں گے اورمقاصد بھی حل نہیں ہونے پائیں گے

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.