fbpx

ملک میں اصل گڑبڑ کہاں ہے؟ جیسی عوام ویسے حکمران (قسط ۔ 07) تحریر: محمداحمد

جیسا کہ پچھلی 6 تحریروں میں بتایا کہ کس طرح ضمیر کی سودے بازی ہوتی ہے کیسے لوگ ایمان بیچتے ہے کیسے لوگوں نے دھوکے بازی کرکے انسانی زندگی کو مفلوج کیا ہوا ہے یہ ایسا ناسور ہے جو نسل در نسل تباہ کر دیتا ہے  اِسی مقصد کیلئے آج واضع کریں گے کہ کس طرح موبائل مارکیٹ میں جعلی اور کاپی فون ، جعلی سرف جعلی شیمپو سب اصل ٹیگ کے ساتھ ، 2 نمبر ادویات اصل پیکنگ میں ، ہسپتالوں میں جعلی ڈاکٹرز ، بازاروں میں بد نگاہی اور جھگڑے ہو رہے ہیں بتانے کا مقصد یہ ہے کہ عوام باخبر ہو کہ جو چیز ہم استعمال کر رہے ہیں کیا آیا کہ وہ سہی بھی ہے کہ نہیں اسی کو اج بے نقاب کریں گے

موبائل مارکیٹ میں جعلی اور کاپی فون: 

جب بھی ہمارے ذہن میں سوال آتا کہ ہم نے موبائل فون خریدنا ہے تو سب سے پہلے یہ خیال آتا ہے کہ یہی فون مارکیٹ میں یوزڈ میں بہت عام سیل رہا ہے  جعلی فونز اصل موبائل کی بانسبت بہت عام ہیں اس لیے بہت سے لوگ بہت شوق سے اُن فون کا استعمال کرتے ہیں  لیکن جعلی فونز جلدی خراب ہو جاتے ہیں اور بعد میں ہمیں بہت سے مسائل کا سامنہ کرنا پڑتا ہے   پاکستان میں موبائل فون کا کام بہت عروج پر ہے ملک میں سال 2021 کے پہلے 7 ماہ میں ایک کروڑ 22 لاکھ 70 ہزار موبائل فونز تیار کیے گئے اور اس کے مقابلے 82 لاکھ 90 ہزار موبائل درآمد کیے گئے اگر آپ موبائل فون خریدنے کے خواہش مند ہیں اور آپکو معلومات نہیں ہے کہ اصلی اور جعلی فون کون کونسے ہیں اس بارے میں کچھ چیزوں کا جاننا بہت ضروری ہے 

جیسے کہ اسکرین کو اچھی طرح چیک کرلیں کہ موبائل کی روشنی مدھم تو نہیں اس کے بعد تمام بٹن چیک کرلیں کیونکہ بعض فونز کے Alphabet اپنی جگہ سے تبدیل ہوتے ہیں اس کے بعد ویلکم سکرین ضرور چیک کریں وہاں لوگو آتا ہے تو اصلی ہے اکثر کاپی فونز میں صرف ویلکم لکھا آتا ہے  کیمرہ سے تصویر بنا کہ دیکھنا چاہیے جعلی فونز میں تصویر دھندلی اور بلر ہوتی ہے اس کے ساتھ سکرین کے دائیں بائیں جانب سکرول کر کے چیک کریں اگر موبائل ہینگ ہو جائے تو اس کا مطلب فون کاپی ہے سب سے خاص بات جب موبائل خریدے تو موبائل کا سیریل نمبر ضرور اونلاین چیک کریں جیسے کے موبائل کے about پہ yes کرکے سیریل نمبر نکال کر جس برانڈ کا موبائل ہے اس کی ویب سائٹ پر  IMEI number چیک کریں اگر ویب سائٹ اسے جعلی قرار دے تو فون جعلی ہے  

جعلی سرف جعلی شیمپو سب اصل ٹیگ کے ساتھ: 

جعلی سرف اور جعلی شیمپو بنانے والے مختلف قسم کے کیمکل اور سٹیرائڈز استعمال کرتے ہیں جس سے جِلد بہت جلد متاثر ہوتی ہے مارکیٹس میں مختلف قسم کے برانڈ کی صورت میں ملنے والے شیمپو ، کریمیں  جلد کو جلا رہے ہیں اس سے بہت سے اثرات مرتب ہو رہے ہیں ہمیں چاہیے کہ خاص کمپنی کی ایشیاء کو استعمال کریں ان ایشیاء پہ موجود بارکوڈ کو اسکین کرکے تسلی کرنی چاہیے کہ آیا جو برانڈ ہم استعمال کر رہے ہیں  کی اصلی ہے یا جعلی

ہسپتالوں میں جعلی ڈاکٹرز: 

ہسپتالوں میں جعلی ڈاکٹرز کا دھندہ عروج پر ہے ہمارے معاشرے میں لوگ افس بواۓ کا کام کرتے کرتے ڈاکٹر بن جاتے ہیں ایک واقع میری انکھوں کے سامنے سے بھی گزرا کہ ایک غریب آدمی جو زیادہ پڑھا لکھا نہیں تھا بمشکل میٹرک پاس کی پھر کام کی تلاش کرنے لگا ایک دن ایک دندان ڈاکٹر سے ملاقات ہوئی اس نے اسے اپنا تمام احوال بتایا اس نے مشورہ دیا کہ میرے پاس آجاؤ آفس بوائے کے ساتھ میری مدد کرتے رہنے اور اپنی اجرت لیتے رہنا ۔ وقت گزرتا گیا وہی لڑکا سب سیکھتا گیا کیسے ڈاکٹر مریض سے گفتگو کرتا ہو کیا میڈیسن لکھ کے دیتا ہے وغیرہ وغیرہ تین سال کے عرصہ کے بعد اس غریب ادمی نے محسوس کیا  کہ اسے اب اپنا کلینک بنا لینا چاہیے اسے کام کی نوعیت کا پتا چل گیا ہے خیر اس نے کلینک بنا کر اپنا کام شروع کردیا 

اب وہ شخص پیشے سے ڈاکٹر نہیں ہے لیکن ڈاکٹر کا بورڈ لگا کر دن رات لوگوں کی زندگیوں سے کھیل رہا ہے اسی طرح بہت سارے ہسپتالوں میں آپ کو ایسی مثالیں روزانہ کی بنیاد پر ملیں گی اس کی روک تھام کیلئے حکومت کو ہر وقت الرٹ رہنا چاہیے 

بازاروں میں بد نگاہی اور جھگڑے:

بازاروں میں بد نگاہی اور جھگڑے معاشرے کا ایسا ناسور ہے جسے ختم نہیں کیا جا سکتا پہلے وقت اچھے تھے لوگوں میں عزت احترام تھا رشتوں میں تقدس تھا لیکن وقت کے ساتھ ساتھ سب سفید ہو گیا ہر ماں باپ کی کوشش ہوتی ہے کہ اس کے بچے کی اچھی تربیت ہو دن رات محنت کرے اپنے ماں باپ کا نام روشن کرے لیکن آج کل نفسہ نفسی کے دور میں صحبت سے بہت لوگ متاثر ہو رہے ہیں جس انسان میں شعور ہے کہ میں اگر کسی کی بہن ، بیٹی کی طرف بدنگاہی سے دیکھوں گا تو کوئی میرے گھر کی طرف بھی بدنگاہی رکھے گا اسی لئے آج کل تعلیم بہت ضروری ہوگی ہے کہ ہر انسان میں شعور آجاۓ رشتوں کی قدر کا احساس ہو جاۓ ہمارے معاشرے میں 95٪ لوگوں کے جھگڑے بدنگاہی کی وجہ سے جنم لے رہے ہیں اس کی عام وجہ گھر گھر میں موبائل کے غلط استعمال کی وجہ سے مسائل در پیش ہو رہے ہیں موبائل ہر گھر کی اب ضرورت بن گیا ہے لیکن موبائل کا ستعمال صرف گھر کے سربراہ کے پاس ہونا چاہیے نا بچے فحاشی کی طرف گامزن ہوں نا معاشرے میں بدنگاہی عروج پہ ہو

اگلی قسط میں شئیر کیا جاۓ گا کہ کس طرح امتحانات میں نقل ، مسلمان لڑکیوں میں قرآن پاک کی جگہ فحاشی کے ڈائجسٹ ، ناپ تول میں کمی ، دوستی میں خود غرضی ، محبت میں دھوکہ ، ایمان میں منافقت کیسے ہو رہی ہے بتانے کا مقصد یہ ہے کہ عوام باخبر ہو کہ ملک میں اصل گڑبڑ ہم کر رہے ہیں ۔ جیسی عوام ویسے حکمران

@JingoAlpha

Facebook Notice for EU! You need to login to view and post FB Comments!