fbpx

مری:کار پارکنگ نہ رکھنےوالے ہوٹلز،شاپنگ مال اوراپارٹمنٹس کوبند کرنےکی تجویزمگراطلاق مشکل

مری :مری:کار پارکنگ نہ رکھنےوالے ہوٹلز،شاپنگ مال اوراپارٹمنٹس کوبند کرنےکی تجویزمگراطلاق مشکل ،اطلاعات کے مطابق ملکی سیاحتی مقام مری میں برفباری میں پھنسنے سے ہوئی اموات کی تحقیقات کرنے والی کمیٹی نے کار پارکنگ نہ رکھنے والے ہوٹلز، شاپنگ مالز اوراپارٹمنٹس کوبند کرنے کی تجویز دے دی۔

وزیراعلیٰ پنجاب کی جانب سے بنائی گئی تحقیقاتی کمیٹی نے مری کے مختلف علاقوں کا دورہ کیا۔ اس دوران کمیٹی نے سفارش کی کہ مری میں دوبارہ سانحے سے بچنا ہے تو غیرقانونی تعمیرات گرانی ہوں گی اور تجاوزات ختم کرنے کیلئے گرینڈ آپریشن کرنا ہوگا۔

کمیٹی نے غیرقانونی تعمیرات، عمارتیں ،پلازے اور ہوٹل سیل کرنے، کار پارکنگ نہ رکھنے والے ہوٹلز، شاپنگ مالز اوراپارٹمنٹس کوبھی بند کرنے کی تجویز دی ہے۔ مری ایکسپریس وے سمیت مری کی تمام ملحقہ شاہراہوں پرغیر قانونی تجاوزات بڑی رکاوٹ قرار دی گئی ہیں۔

دوسری جانب سیاحوں کو مری میں داخلے کی مشروط اجازت دی گئی ہے اور یومیہ 8 ہزار سے زائد گاڑیوں کو داخلے کی اجازت نہیں ہو گی۔

مری کے تمام راستوں سے روزانہ زیادہ سے زیادہ 8 ہزار گاڑیوں کو داخلے کی اجازت ہوگی، ڈپٹی کمشنر راولپنڈی نے نیشنل ڈیزاسٹر منیجمنٹ ایکٹ 2010 کے تحت نوٹیفکیشن جاری کردیا ۔

ضلعی انتظامیہ کی جانب سے جاری نوٹیفکیشن کے مطابق گاڑیوں کی حد مری، آزاد کشمیر کے رہائشیوں اور سرکاری و فوجی گاڑیوں پر لاگو نہیں ہوگی۔

چیف ٹریفک آفیسر راولپنڈی گاڑیوں کے مری میں داخلے کی مقررہ تعداد یقینی بنانے کیلئے نظام مرتب کریں گے، شام پانچ سے صبح پانچ بجے تک گاڑیوں کے مری میں داخلے کی اجازت نہیں ہوگی۔

نوٹیفکیشن کے مطابق پیٹرول، ایل پی جی اور خوراک لے جانے والی گاڑیوں کو استثنٰی حاصل ہوگا۔محکمہ موسمیات کے تعاون سے ٹریفک کو ریگولیٹ کرنے کا مؤثر نظام بنایا جائے گا، ڈپٹی کمشنر راولپنڈی کے نوٹیفکیشن کے مطابق مری آنے جانے والی گاڑیوں کا باقاعدہ ڈیٹا مرتب کیا جائے گا۔