بھارت امریکہ 17 ویں انسدادِ دہشت گردی مشترکہ ورکنگ گروپ کے اعلامیے پر پاکستان کا ردعمل

پاکستان، بھارت- امریکہ مشترکہ ورکنگ گروپ برائے انسداد دہشت گردی کے 17 ویں اجلاس کے مشترکہ اعلامیے میں پاکستان کے بلاجواز حوالے کو سختی سے مسترد کرتا ہے۔ ترجمان وزارت خارجہ کی طرف سے جاری کردہ اعلامیہ میں کہا گیا ہے کہ پاکستان نے اس حوالے سے اپنے تحفظات امریکی متعلقہ حکام تک پہنچا دیے ہیں۔ترجمان نے کہا کہ ضرورت اس بات کی ہے کہ تمام شریک ممالک جنوبی ایشیائی خطے کے امن و امان سے جڑے مسائل کا تذکرہ، زمینی حقائق کو پیش نظر رکھتے ہوئے کریں اور یک طرفہ اور حقائق کے منافی آراء سے احتراز کریں۔ ترجمان نے کہا کہ بین الاقوامی برادری اس حقیقت سے اچھی طرح باخبر ہے کہ پاکستان ہندوستان کی ایما اور معاونت پر مبنی سرحد پار سے ہونیوالی دہشت گردی کا شکار رہا ہے۔ عالمی برادری پاکستان کی دہشت گردی کے خلاف کی جانے والی کاوشوں، قربانیوں اور ان کے نتیجے میں حاصل ہونیوالی کامیابیوں کو بھی تسلیم کرتی ہے۔ ترجمان وزارت خارجہ کا کہنا ہے کہ پاکستان اس امر کا بارہا اظہار کر چکا ہے کہ آر ایس ایس کے ایجنڈے پر گامزن بی جے پی سرکار کا غیر ذمہ دارانہ رویہ، اقلیتوں کے ساتھ ناروا سلوک، مقبوضہ کشمیر میں ریاستی دہشت گردی، اورپاکستان اور خطے کے دیگرممالک کےخلاف بھارت کاجارحانہ سلوک، پورے جنوبی ایشیائی خطے کے امن کو شدید خطرات سے دوچار کر رہا ہے۔ عالمی برادری کو بھارت پر زور دینا چاہیے کہ وہ خطے کے امن و استحکام کے منافی روش اپنانے سے باز رہے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.