fbpx

ین اے 249 کا ضمنی انتخاب، حلقے کے عوام کا فیورٹ لیڈر کون؟ سروے رپورٹ جاری

این اے 249 کا ضمنی انتخاب، گیلپ پاکستان سمیت 3 سرویز کے نتائج جاری، 2 سرویز میں حلقے کے عوام نے وزیراعظم عمران خان کو سب سے مقبول اور پسندید شخصیت قرار دے دیا، تیسرے سروے میں نواز شریف مقبول شخصیت قرار پائے۔ تفصیلات کے مطابق گیلپ پاکستان سمیت 3 سرویز کے نتائج سامنے آگئے ہیں۔ وزیراعظم عمران خان نے حلقے کے عوام سے 2 سرویز میں سب سے فیورٹ لیڈر ہونے کا اعزاز حاصل کر لیا ہے۔
جبکہ تیسرے سروے میں نواز شریف مقبول اور پسندیدہ لیڈر قرار پائے ہیں ۔تینوں سرویز 10 اپریل سے 20اپریل 2021 کے درمیان کیے گئے۔ذرائع کے مطابق کراچی کے حلقے این اے 249 پر ضمنی انتخاب قریب آن پہنچا ہے جبکہ علاقے میں عوام کے پسندیدہ لیڈر کیلئے کیے گئے تین سرویز کی رپورٹ بھی آگئی ہے۔
29 اپریل کو ہونے والے ضمنی انتخاب میں عمران خان کو اب بھی علاقے کے لوگ سب سے پسندیدہ اور مقبول شخصیت بتاتے ہیں۔
گیلپ پاکستان، اپسوس اور پلس کنسلٹنٹ کے سروے کے مطابق سروے میں قومی اسمبلی کے حلقے این اے 249 سے شماریاتی طور پر منتخب 1200 سے 1400 سے زائد رجسٹرڈ ووٹرز نے حصہ لیا۔حلقے کے ووٹرز سے پسندید ہ رہنما کے سوال پر پلس کنسلٹنٹ کے سروے میں 18 فیصد نے وزیر اعظم عمران خان کو سب سے زیادہ پسندیدہ اور مقبول کہا جس کے بعد 16 فیصد نے پاک سرزمین پارٹی کے سربراہ مصطفیٰ کمال کو فیورٹ قرار دیا۔
10 فیصد نے نواز شریف، 7 فیصد نے خادم حسین رضوی، 6 فیصد نے بینظیر بھٹو، 5 فیصد نے فاروق ستار، 4 فیصد نے پرویزمشرف، 3 فیصد نے مریم نواز جبکہ 2 فیصد نے خالد مقبول صدیقی کو اپنا فیورٹ کہا۔اپسوس پاکستان کے سروے میں عمران خان20 فیصد کے ساتھ حلقے کے مقبول ترین رہنما نظر آئے۔16 فیصد نے نواز شریف جبکہ 16 فیصد نے مصطفیٰ کمال کو اپنا پسندیدہ کہا۔
5 فیصد نے خادم حسین رضوی، 4 فیصد نے بلاول بھٹوزرداری، 4 فیصد نے مریم نواز شریف، 3 فیصد نے مولانا فضل الرحمان، 3 فیصد نے خالد مقبول صدیقی، سراج الحق، آصف علی زرداری، شہباز شریف، سعد حسین رضوی کو ایک ایک فیصد جبکہ 18 فیصد نے کہا کہ کوئی بھی لیڈر ان کا پسندیدہ نہیں۔دونوں سرویز کے برعکس گیلپ پاکستان کے سروے میں حلقے کے 20 فیصد ووٹرز نے ن لیگ کے سربراہ نواز شریف کو پسندیدہ کہا جبکہ 19 فیصد نے وزیر اعظم عمران خان کو اپنا فیورٹ قرار دیا۔
8 فیصد نے پی پی پی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری، 5 فیصد نے پرویز مشرف، 3 فیصد نے پی ایس پی کے مصطفیٰ کمال، 3 فیصد نے فضل الرحمان، 2 فیصد نے مریم نواز، 1 فیصد نے شہباز شریف ، 1 فیصد نے آصف علی زرداری ، ایک فیصد نے سراج الحق جبکہ 1 فیصد نے بینظیر بھٹو کو اپنا پسندیدہ لیڈر کہا۔واضح رہے کہ پاکستان سمیت دنیا بھر میں انتخابات سے قبل سروے کروانے کی روایت کافی پُرانی ہے، جس میں یہ دیکھا جاتا ہے کہ حلقے یا علاقے کے عوام کس سیاسی رہنما کو زیادہ پسند کرتے ہیں۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.