fbpx

نااہلی کا خوف ابھی بھی نہ گیا، فیصل واوڈ عدالت پہنچ گئے

نااہلی کا خوف ابھی بھی نہ گیا، فیصل واوڈ عدالت پہنچ گئے

تحریک انصاف کے رہنما وفاقی وزیر فیصل واوڈا نے الیکشن کمیشن میں زیرسماعت نااہلی کیس رکوانے کیلئے ہائیکورٹ سے رجوع کر لیا

سابق وفاقی وزیرفیصل واوڈا نے الیکشن کمیشن کے 12 اکتوبر کے فیصلے کو ہائیکورٹ میں چیلنج کر دیا ،الیکشن کمیشن نے 12 اکتوبر کو فیصل واوڈا کی درخواست مسترد کی تھی الیکشن کمیشن نے فیصل واوڈا کیخلاف درخواست پر سماعت جاری رکھنے کا فیصلہ کیا تھا ،ہائیکورٹ میں دائر درخواست میں موقف اپنایا گیا کہ میرے خلاف دائر درخواستیں زائد المعائد ہو چکیں، ECP میرے منتخب ہونے پر 60 دن کے اندر ہی ایسی درخواست سن سکتا تھا

قبل ازیں الیکشن کمیشن میں فیصل واوڈا نااہلی کیس کی سماعت 2 دسمبر تک ملتوی کر دی گئی،درخواست گزار قادر خان مندوخیل و دیگرالیکشن کمیشن میں پیش ہوئے اورکہا کہ میں اپنے دلائل مکمل کرچکا ہوں،الیکشن کمیشن نے کہا کہ ہم نے تمام درخواستگزاروں سے تحریری دلائل جمع کرانے کا کہا تھا .قادر مندوخیل نے کہا کہ آج تک پتہ نہیں چلا کہ فیصل واوڈا نے امریکی شہریت کس دن چھوڑی، الیکشن کمیشن نے کہا کہ ہم تاریخ دیکھ لیں گے کہ فیصل واوڈا نے کب امریکی شہریت چھوڑی گئی، الیکشن کمیشن نے فریقین سے حتمی دلائل مانگ لیے

 

نااہلی سے بچنے کے لئے فیصل واوڈا نے عدالت میں کیا قدم اٹھا لیا

فیصل واوڈا نااہلی کیس، جلد سماعت کیلئے مقرر کرنے پر عدالت کا حکم آ گیا

کیا فیصل واوڈا قانون سے بالا تر ہیں؟ ،عدم پیشی پر الیکشن کمیشن کا اظہار برہمی

استعفیٰ دینے کے بعد فیصل واوڈا الیکشن کمیشن میں پیش، پھر مہلت مانگ لی

میری غلطی ہے تو پھانسی لگا دیں لیکن یہ کام ضرور کریں، فیصل واوڈا کا الیکشن کمیشن میں بیان

فیصل واوڈا کی نااہلی کے لیے دائر درخواست میں موقف اپنا گیا ہے کہ انہوں نے کاغذات نامزدگی میں جعلی حلف نامہ جمع کروایا۔ درخواست میں کہا گیا ہے کہ فیصل واوڈا کو جعلی حلف نامہ جمع کروانے پر نااہل کیا جائے کیونکہ  صادق اور امین نہیں رہے۔ سپریم کورٹ دوہری شہریت رکھنے پر 2 سینٹرز کو نا اہل قراردے چکی ہے

Facebook Notice for EU! You need to login to view and post FB Comments!