fbpx

الیکشن ایکٹ ترمیمی بل 2022 کےبعدنیب ترمیمی بل 2022 بھی کثرت رائے سے منظور

اسلام آباد: الیکشن ایکٹ ترمیمی بل 2022 کےبعدنیب ترمیمی بل 2022 کثرت رائے سے منظورہوچکا ہے ، یہ بل وزیرقانون اعظم نذیر تارڑ میں ایوان میں پیش کیا جسے پارلیمنٹ نےکثرت رائے سے منظورکرلیا ،

پارلیمنٹ کا مشترکہ اجلاس جاری ہے اور حکومت اور اتحادیون نے کثرت کے ساتھ الیکشن ایکٹ ترمیمی بل 2022کثرت رائے سے منظورکرلیا ہے ،

اس سے پہلے گفتگو کرتے ہوئے پاکستان مسلم لیگ (ن) کے سینیٹر اور وزیر قانون اعظم نذیر تارڑکا کہنا تھا کہ قانون سازی کرنا پارلیمنٹ کا اختیار ہے،صدر مملکت پارلیمنٹ کو ہدایات نہیں دے سکتے: پاکستان مسلم لیگ (ن) کے سینیٹر اور وزیر قانون اعظم نذیر تارڑ نے کہا ہے کہ صدرمملکت پارلیمٹ کوہدایات نہیں دے سکتے ،قانون سازی کرنا پارلیمنٹ کا اختیار ہے

کیا یہ کورٹ پارلیمنٹ سے اختیارات واپس لے لے؟ عدالت کے ریمارکس

پاکستان مسلم لیگ (ن) کے سینیٹر اور وزیر قانون اعظم نذیر تارڑ کا کہنا تھا کہ ایوان کی بالادستی کیلئے صدر کے درخواست کا لفظ استعمال کیا،اعظم نذیر تارڑ کہتے ہیں کہ آرٹیکل 75 کے مطابق صدر مملکت بل میں تجاویز کی درخواست کر سکتے ہیں،مرتضیٰ جاوید عباسی کا یہ کہنا تھا کہ انتخابات میں ٹیکنالوجی کا استعمال پائلٹ پروجیکٹس کے بعد ہونا چاہیے،

مرتضیٰ جاوید عباسی کا کہنا تھا کہ ای وی ایم پائلٹ پروجیکٹ رپورٹ کے مطابق کامیابی کی شرح 50 فیصد تھی ،الیکشن کمیشن کے کام کا کریڈٹ صدر مملکت لے رہے ہیں ،ان کا کہنا تھا کہ صدر مملکت نے نتیجہ اخذ کیا کہ ای وی ایک بیلٹ پیپر کی طرح ہی ہے ،

برطانوی رکن پارلیمنٹ کی برٹش ایئرویز کو پاکستان سے پروازیں جاری رکھنے کی اپیل

مرتضیٰ جاوید عباسی نے اس موقع پر کہا کہ صدر مملکت نے تسلیم کیا 2018 کے بعد اوورسیز پاکستانیوں کی ووٹنگ کیلئے کوئی پیشرفت نہیں ہوئی، ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ آج پتہ چلا صدر عارف علوی آئی ٹی کے بھی ماہر ہیں، ہم سمجھتے تھے عارف علوی دانتوں کے ڈاکٹر ہیں

پارلیمنٹ کےمشترکہ اجلاس کا ایجنڈا جاری

مرتضیٰ جاوید عباسی کا کہنا تھا کہ آئینی عہدے پر بیٹھا شخص سیاسی جماعت کے کارکن کا کردار ادا کر رہا ہے،ادھر آخری اطلاعات کے آنے تک یہ بھی معلوم ہو اہے کہ سابق صدر آصف علی زرداری بھی پارلیمنٹ میں پہنچ چکے ہیں