fbpx

بجلی کے منصوبوں میں اربوں روپے بچائے، بدلے میں جیلیں بھگتیں،، شہباز شریف

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف شہباز شریف نے کہا ہے کہ 2013 میں20 گھنٹے لوڈشیڈنگ ہوا کرتی تھی،

شہباز شریف کا کہنا تھا کہ 2013 سے 18تک ن لیگ حکومت نے لوڈشیڈنگ کا مکمل خاتمہ کیا،نوازشریف کی قیادت میں ہم نےلوڈشیڈنگ کوہمیشہ ہمیشہ کیلئےختم کردیا تھا،موجودہ حکومت کے 3سال میں لوڈشیڈنگ کا سلسلہ دوبارہ شروع ہوچکا ہے،عمران خان نے معیشت کوتباہ کردیا،لاکھوں لوگ بے روزگارہوچکے ہیں،ہم پرلزام لگایا گیا کہ کمیشن کھانے کیلئے ن لیگ حکومت نے اضافی بجلی پیدا کی، اگر بجلی فالتوپیدا کی گئی تھی تواب آپ نئے منصوبے کیوں لگارہے ہیں؟ہم نے اپنے دورمیں سستے ترین پاورپلانٹس لگائے،نیب نیازی گٹھ جوڑنے پورا زورلگایا لیکن ایک دھیلے کی کرپشن ثابت نہیں کرسکے،

شہباز شریف کا مزید کہنا تھا کہ شاہدخاقان ،احسن اقبال سمیت دیگرکوجیلوں میں ڈالاگیا لیکن کچھ ثابت نہیں کر سکے ،ہم نے بجلی کے جو 4 منصوبے لگائےاس میں قوم کے ڈھائی سوارب روپے بچائے گئے،تریموں پاورپلانٹس کامعاہدہ ہم نے2017میں کیا،2019میں آپریشنل ہونا تھا، موجودہ حکومت کی نااہلی کی وجہ سے اب تک یہ پاورپلانٹس بند پڑا ہے،ہم پرلگائے گئے الزامات اب خود ان کیلئے خوف کا باعث ہیں،بجلی اضافی تھی تو لوڈشیڈنگ کیوں ہورہی ہے؟ نیلم جہلم پروجیکٹ پر5ارب ڈالرخرچ ہوئے،ہمارے بجلی کے منصوبوں پر تنقید کرنے والے خود مہنگی ترین بجلی پیدا کر رہے ہیں ہمارے ایل این جی کے منصوبوں پر تنقید کرنے والے خود مہنگی ترین ایل این جی امپورٹ کر رہے ہیں ہم نے بجلی کے منصوبوں میں اربوں روپے بچائے، بدلے میں جیلیں بھگتیں، یہ کہتے ہیں بجلی کی ترسیل کا نظام نہیں ہے تو پھر 2018 اور 2019 میں وافر بجلی سسٹم تک کیسے ترسیل ہورہی تھی