fbpx

نفرت انگیز تقاریر روزانہ میڈیا پر چل رہی ہوتی ہیں ایک آدمی بھی نہیں پکڑا،عدالت

نفرت انگیز تقاریر روزانہ میڈیا پر چل رہی ہوتی ہیں ایک آدمی بھی نہیں پکڑا،عدالت

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق اسلام آباد ہائیکورٹ میں ایف آئی اے کے اختیارات سے تجاوز کے خلاف کیس کی سماعت ہوئی

اسلام آباد ہائیکورٹ کے چیف جسٹس اطہرمن اللہ نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ بتائیں کہ ایف آئی اے کے بنائے گئے ایس او پیز پر کیوں عمل نہیں ہو رہا؟ جہاں پر ڈریکونین لاز ہیں وہاں ایسے قوانین استعمال ہوتے ہیں جو آپ ہمیں بتا رہے ہیں، قانون کی یہ شقیں جنہوں نے بنائی تھیں انہوں نے تو خود انہیں استعمال کرنا چھوڑ دیا،شہریوں کے بنیادی حقوق کا تحفظ عدالت کی ذمہ داری ہے، ایف آئی اے پیکا ایکٹ کو چھوڑ کر اب پاکستان پینل کوڈ پر چلی گئی ہے، نفرت انگیز تقاریر روزانہ میڈیا پر چل رہی ہوتی ہیں ایک آدمی بھی نہیں پکڑا،

اس سے قبل ایک اور کیس کی سماعت کے دوران عدالت نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا تھا کہ آپ نے نوٹس جاری کیوں کیا تھا؟ پاور اس وقت استعمال کریں کہ جب ایف آئی اے کے لوگ تربیت یافتہ ہو جائیں یہ غیر ضروری ہراساں کرنا ہے، تفتیشی افسر نے جان بوجھ کر نوٹس جاری کیا تھا؟ ایف آئی اے مان گیا ہے کہ نوٹس غلط طور پر جاری ہوا ہے ایک غلطی ہوئی تو اچھی بات ہے کہ اس کو سدھارا بھی گیا ہے آئندہ کے لیے معاملات کو درست ہونا چاہیے،

جسٹس اسلام آباد ہائیکورٹ اطہرمن اللہ نے کہا کہ عدالت کو ایسا تاثر مل رہا ایف آئی اے سلیکٹیو کارروائی کر رہی ہے،یہ بھی دیکھنے میں آیا حکومتی اراکین کی شکایت پر ایف آئی اے فوری کارروائی کرتا یے، عام آدمی کی شکایت پر کارروائی نہیں ہوتی، آپ ایک صحافی کو نوٹس کرتے ہیں اس کا دوسروں پر اثر پڑتا ہے، ایف آئی اے نے ایک صحافی کو بلایا اور کہا اپنا سورس بتاؤ، تنقید سے نہیں گھبرانا چاہیے، تنقید نہیں ہوگی تو احتساب نہیں ہوگا،ایک شہری نے انوائرمنٹ کا ایشو اجاگر کیا اس کو ایف آئی اے نے حراساں کیا، پبلک آفس ہولڈر کو تنقید کے لیے تیار رہنا چاہیے، نفرت انگیز تقریر وہ ہے جس سے سوسائٹی میں بیگاڑ پیدا ہوگا،یہاں تو انوائرمنٹ پر بات کرنے پر ایف آئی اے نے کارروائی کر دی،

سپریم کورٹ نے صحافی مطیع اللہ جان کے اغوا کا نوٹس لے لیا

کسی کی اتنی ہمت کیسے ہوگئی کہ وہ پولیس کی وردیوں میں آکر بندہ اٹھا لے،اسلام آباد ہائیکورٹ

پریس کلب پر اخباری مالکان کا قبضہ، کارکن صحافیوں نے پریس کلب سیل کروا دیا

صحافیوں کو کرونا ویکسین پروگرام کے پہلے مرحلے میں شامل کیا جائے، کے یو جے

بسکٹ آسانی سے ہضم ہو جاتا ہے اس کے اشتہار میں ڈانس کیوں؟ اراکین پارلیمنٹ نے کیا سوال

میرے پاس کوئی اختیار نہیں، قائمہ کمیٹی اجلاس میں چیئرمین پیمرا نے کیا بے بسی کا اظہار

میڈیا کو حکومت نے اشتہارات کی کتنی ادائیگیاں کر دیں اور بقایا جات کتنے ہیں؟ قائمہ کمیٹی میں رپورٹ پیش

تحریک انصاف کے خلاف ن لیگ کے اشتہارات کی ادائیگی کس نے کی؟ فیصل جاوید کا انکشاف

حکومت کے حق میں آرٹیکلز لکھنے پر اشتہارات ملتے ہیں، قائمہ کمیٹی میں انکشاف

قائمہ کمیٹی کا اجلاس،تنخواہیں کیوں نہیں دی جا رہیں؟میڈیا ہاﺅسز کے اخراجات اور آمدن کی تفصیلات طلب

پولیس جرائم کی نشاندہی کرنے والے صحافیوں کے خلاف مقدمے درج کرنے میں مصروف

بیوی، ساس اورسالی کی تصاویر سوشل میڈیا پر وائرل کرنے کے الزام میں گرفتارملزم نے کی ضمانت کی درخواست دائر

سپریم کورٹ کا سوشل میڈیا اور یوٹیوب پر قابل اعتراض مواد کا نوٹس،ہمارے خاندانوں کو نہیں بخشا جاتا،جسٹس قاضی امین

‏ سوشل میڈیا پر وزیر اعظم کے خلاف غصے کا اظہار کرنے پر بزرگ شہری گرفتار

سوشل میڈیا چیٹ سے روکنے پر بیوی نے کیا خلع کا دعویٰ دائر، شوہر نے بھی لگایا گھناؤنا الزام

میں نے صدر عارف علوی کا انٹرویو کیا، ان سے میرا جھوٹا افیئر بنا دیا گیا،غریدہ فاروقی

Facebook Notice for EU! You need to login to view and post FB Comments!