fbpx

کینسر کا شکار نائلہ جعفری کی وائرل ویڈٰیو پر شوبز فنکاروں کا رد عمل

کینسر کی شکار سینئر اداکارہ نائلہ جعفری کی جانب سے مالی مدد کی اپیل کے بعد اداکار بھی ان کی مدد کے لیے سامنے آگئے۔

باغی ٹی وی : نائلہ جعفری گزشتہ 5 سال سے کینسر سے جنگ لڑ رہی ہیں اور حال ہی میں انہیں انفیکشن کی وجہ سے ہسپتال داخل کرایا گیا تھا ہسپتال میں داخل کرائے جانے کے بعد چند دن قبل ان کی ایک ویڈیو وائرل ہوئی تھی، جس میں وہ ہسپتال کے بستر سے کسم پرسی کی حالت میں مدد مانگتے ہوئے آبدیدہ ہوگئی تھیں۔

نائلہ جعفری نے واضح طور پر شوبز شخصیات یا ٹی وی مالکان سے مالی مدد نہیں مانگی تھی، تاہم انہوں نے مطالبہ کیا تھا کہ جن اداکاروں کے ڈرامے دوبارہ نشر کیے جاتے ہیں انہیں ان کا معاوضہ بھی دوبارہ ملنا چاہیے۔

اداکارہ کی ویڈیو وائرل ہونے کے بعد سندھ کی وزارت ثقافت نے نائلہ جعفری کی مدد کا اعلان کیا تھا اور اداکارہ کے علاج کے تمام اخراجات برداشت کرنے کی یقین دہانی بھی کروائی تھی۔

اور اب نائلہ جعفری کی مدد کے لیے اداکار میکال ذوالفقار اور یاسر حسین بھی سامنے آگئے۔

میکال ذوالفقار اور یاسر حسین نے داکارہ کے مطالبے کی حمایت کی اور کہا کہ ٹی وی مالکان کو ڈرامے دوبارہ نشر کرنے یا انہیں یوٹیوب سمیت دیگر سائٹس پر چلانے کا معاوضہ بھی دینا چاہیے۔

میکال ذوالفقار نے نائلہ جعفری کی مالی معاونت کا اعلان کرنے پر سندھ حکومت کی تعریف کی اور ساتھ ہی کہا کہ یہ لازمی ہوگیا ہے کہ ٹی وی مالکان ڈرامے کو دوبارہ نشر کرنے یا پھر اسے یوٹیوب سمیت دیگر سائٹس پر چلائیں تو اداکاروں کو بھی دوبارہ معاوضہ دیں۔

میکال ذوالفقار کے مطابق ٹی وی مالکان کو لکھاریوں، ہدایت کاروں اور پروڈیوسرز سمیت اداکاروں کو بھی ہر بار معاوضہ دینا چاہیے اور اب اس عمل کو تبدیل ہونا چاہیے کہ صرف ایک بار ہی معاوضہ ملے گا۔

یاد رہے کہ میکال ذوالفقار پہلے بھی مطالبہ کر چکے ہیں کہ ڈرامے کو دوبارہ نشر کرنے پر ٹی وی مالکان اداکاروں کو معاوضہ بھی دوبارہ فراہم کریں۔

دوسری جانب اداکار یاسر حسین نے کہا کہ یہ ٹی وی والوں کے لیے شرم کا مقام ہے اور ہم سب اداکاروں کے لئے بھی-

یاسر حسین نے لکھا کہ افسوس صد افسوس، پھر ہم کہتے ہیں کہ ہمیں خدا کا خوف ہے اور آخرت سے ڈرتے ہیں۔

واضح رہے کہ نائلہ جعفری 2016 سے بیمار ہیں اور ابتدائی طور پر ان میں اوورین کینسر کی تشخیص ہوئی تھی اور بعد ازاں ان میں معدے کے کینسر کی بھی تشخیص ہوئی کینسر کے تیسرے اسٹیج کی وجہ سے انہیں تشویش ناک حالت میں ہسپتال داخل کرایا گیا بعد ازاں نائلہ جعفری کو کچھ عرصہ ہسپتال میں رکھنے کے بعد ڈسچارج کردیا گیا تھا تاہم وہ 2016 سے مسلسل زیر علاج ہیں اور وقتاً فوقتاً ہسپتال داخل ہوتی رہتی ہیں۔

اداکارہ نے 2017 میں اس وقت کی مرکزی پاکستان مسلم لیگ (ن) کی حکومت کی مالی مدد لینے سے انکار کردیا تھا تاہم بعد ازاں انہوں نے اس وقت کے صدر مملکت ممنون حسین کی معاونت قبول کی تھی ساتھ ہی انہوں نے حکومت سندھ کی مالی مدد بھی قبول کی تھی۔

سندھ حکومت کا کینسر کا شکار نائلہ جعفری کی مالی معاونت کا اعلان

کنیسر میں مبتلا اداکارہ نائلہ جعفری کی حکومت سے بیمار اور سینئراداکاروں کی مالی…

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.