نصیر آباد کے میونسپل حکام ” کفن چور” نکلے

نصیر آباد ڈویژن کے چند ایک میونسپل اداروں میں عبرت انگیز کرپشن ہو رہی ہے
0
35
naseer abad

ڈیرہ مراد جمالی (منصور مگسی ): نصیر آباد کے میونسپل حکام ” کفن چور” نکلے-

باغی ٹی وی: باخبر ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ نصیر آباد ڈویژن کے چند ایک میونسپل اداروں میں عبرت انگیز کرپشن ہو رہی ہے جس کے تحت لاشوں ، مزدوروں اور کتوں کے بجٹ کو بھی مبینہ طور پر ہڑپ کرنے کا دھندہ پرانا ہے جن کو خوردبرد کرنے کیلئے عجیب عجیب قسم کے طریقہ کار استعمال کئے جاتے ہیں-

ذرائع کے مطابق میونسپل اداروں کے مجاز حکام کفن چور، مزدور کش، انسان کش اور آوارہ کتوں کے محافظ بنے ہوئے ہیں لاوارث میت یا لاشوں کو دفنانے کے ماہرین ہر ماہ دو یا تین حقیقی لاوارث لاشوں کی تدفین کے ساتھ ساتھ کئی فرضی لاوارث لاشوں کی بھی” تدفین” کر لیتے ہیں جس سے اس مد میں متعلقہ مخصوص بجٹ پر ہاتھ صاف کرتے رہتے ہیں جبکہ صفائی کے عملے کے عارضی ملازمین میں سے فرض شناس ملازمین کو مبینہ طور پر 22 ہزار روپے کی جگہ 10 ہزار روپے دیئے جاتے ہیں اور دستخط 22 ہزار روپے کی وصولی کے لیئے جاتے ہیں انکار کی صورت میں ان غریب ملازمین کو ملازمت سے فارغ کرنے کی دھمکی دی جاتی ہے-

ترکیہ نےسویڈن کی نیٹو رکنیت کیلئےحمایت کر دی

اس کے برعکس بااثر شخصیات کے مخصوص عارضی ملازمین کو گھر بیٹھے 22 ہزار روپے کی تنخواہ ادا کی جاتی ہے جبکہ آوارہ اور باولے کتوں کو تلف کرنے کی بجائے ان کی رقم بھی مبینہ طور پر ہڑپ کی جاتی ہے جس سے کتے تو مرنے سے بچ جاتے ہیں مگر ان آوارہ کتوں کے کاٹنے سے مہنگا علاج نہ ملنے کے باعث کتوں کے کاٹے ہوئے غریب مریض اذیت کی موت مر جاتے ہیں ذرائع نے یہ بھی بتایا ہے کہ نصیر آباد ڈویژن کے چند میونسپل اداروں کے بجٹ پر ایک درجن سے زائد بااثر شخصیات کے مہمان خانے چل رہے ہیں اور وہ شخصیات مفت میں” سخی اور فیاض” بنے ہوئے ہیں ۔

دبئی میں ہونےوالی مشاورت میں پی ڈی ایم کےسربراہ کو کیوں دوررکھا گیا؟ حافظ حمداللہ

Leave a reply